سعودی عرب میں اسمگل کی جانے والی ایمفیٹامائن کی 20 لاکھ سے زیادہ گولیاں ضبط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی حکام نے جدہ اسلامی بندرگاہ کے ذریعے ایمفیٹامائن کی 20 لاکھ سے زیادہ گولیاں مملکت میں سمگل کرنے کی کوشش ناکام بنا دی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق نظامتِ عامہ برائے انسدادِمنشیات (جی ڈی این سی) کے ترجمان میجرمحمد النوجیدی نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ فرشی وائپروں کی ایک کھیپ کے اندرچھپائی گئی 22 لاکھ 50 ہزارایمفیٹامائن گولیاں برآمد کرکے ضبط کرلی گئی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ منشیات کی اسمگلنگ اور پروموشن نیٹ ورکس کی نگرانی کے ذریعے نشہ آوردوا کی اس بھاری مقدار کوسعودی عرب میں اسمگل کرکے لانے کی کوشش ناکام بنا دی گئی ہے۔جرائم پیشہ گروہوں کے یہ نیٹ ورکس مملکت کی سلامتی اوراس کے نوجوانوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

انھوں نے یہ بھی بتایا کہ یہ کارروائی زکوٰۃ، ٹیکس اور کسٹم اتھارٹی (زیڈ اے ٹی سی اے) کے ساتھ رابطے کے ذریعے کی گئی ہے۔

النوجیدی کے مطابق یہ کھیپ دارالحکومت الریاض میں مقیم ایک شامی شہری کے نام بھیجی گئی تھی۔اسے حراست میں لے لیا گیا۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مشتبہ شخص کے خلاف ضروری اقدامات کیے گئے اور اس کا کیس پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کردیا گیا ہے۔

گذشتہ ہفتے بھی سعودی حکام نے مملکت میں کیپٹاگون کی 11 لاکھ گولیاں اسمگل کرنے کی کوشش بنادی تھی۔واضح رہے کہ حالیہ برسوں میں سعودی حکام نے مملکت میں منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف اقدامات میں اضافہ کیا ہے۔ کیپٹاگون اور ایمفیٹامائن گولیوں کی متعدد کھیپوں کو اب تک ضبط کیا جاچکا ہے۔ان میں زیادہ تر شام اور لبنان سے بھیجی گئی تھیں۔

اسمگلنگ کی بڑھتی ہوئی کوششوں کے جواب میں سعودی عرب نے 2021 میں لبنان سے پھلوں اور سبزیوں کی درآمد پر پابندی عاید کردی تھی۔ یہ فیصلہ اس وقت کیا گیا جب سعودی کسٹمز نے انار کی پیٹیوں کے اندر بھری ہوئی کیپٹاگون کی پچاس لاکھ سے زیادہ گولیاں برآمد کی تھیں اور انھیں اسمگل کرنے کی کوشش ناکام بنادی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں