روس اور یوکرین

روس کے جاسوس جرمنی میں فعال، زیر تربیت یوکرینی فوجیوں کی جاسوسی

یوکرینی جدید امریکی ٹینکوں اور توپ خانے کی تربیت امریکی فوجی حکام سے لے رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

روسی خفیہ ادارے سے وابستہ جاسوسں نے جرمنی میں یوکرینی فوجیوں کو اسلحے کی تربیت دینے کی جاسوسی کرنے کی کوشش کی ہے۔ اس بارے میں جرمنی کے حکام نے خبردار کیا ہے۔

جرمنی کے جریدے سپیگل میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ کے مطابق جرمنی کی افواج نے نشاندہی کی ہے کہ جس جگہ یوکرینی فوجیوں کو جدید مغربی اسلحے کی تربیت دی جارہی ہے اس کے قریب مشکوک گاڑیوں کو دیکھا گیا ہے۔

سپیگل نے اپنے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ چھوٹے ڈرون طیارے بھی یوکرینی فوجیوں کے تربیتی علاقے کے آس پاس منڈلاتے رہے ہیں۔ یہ دو جگہیں ایسی ہیں جہاں یوکرینی فوجیوں کو جدید ترین امریکی ٹینکوں اور توپ خانے کی تربیت دی جارہی ہیں۔ تربیت کا یہ کام امریکی حکام کر رہے ہیں۔

سکیورٹی ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ روس کے لیے جاسوسی کرنے والوں نے یوکرینی فوجیوں کے موبائل فون ڈیٹا کو بھی سکین کیا ہے۔ دوسری جانب جرمنی نے بھی مختلف مشکوک افراد کو گرفتار کر کے ان سے تفتیش شروع کر رکھی ہے جن کے بارے میں شبہ ہے کہ ان لوگوں نے روس کے لیے جاسوسی کی ہے۔

پچھلے سال جرمنی نے ایک روسی شہری کو سزائے عمر قید دی تھی، اس روسی پر الزام تھا کہ اس نے ایک سابق چیچن کمانڈر کو برلن میں گولی مار کر قتل کر دیا تھا۔

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ایک جرمن شہری ان دنوں ٹرائل سے گزر رہا ہے۔ اس پر بھی الزام ہے کے اس نے روسی انٹیلی جنس کے حکام کو معلومات منتقل کی ہیں۔ یہ جرمن شہری جرمن فوج کے ریزرو آفیسر کے طور پر کام کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں