روس اور یوکرین

یوکرین کو اسلحہ دینے سے امریکی دفاعی صلاحیت متاثر نہیں ہوئی: پینٹا گون

وال سٹریٹ جرنل کی رپورٹ کی پینٹاگون نے تردید کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

پینٹاگون نے ایک مرتبہ پھر ان خبروں کی تردید کی ہے کہ یوکرین کو امریکی اسلحے کی ترسیل کی وجہ سے پینٹاگون کے اسلحہ سٹاک میں کمی ہو گئی ہے۔ اس امرکا دعویٰ کیا گیا تھا کہ یوکرین کو اسلحے کی بار بار ترسیل کے باعث امریکی فوج کی ملکی دفاع کے لیے تیاری متاثر ہوئی ہے۔

پینٹا گون کے ایک سینئیر ذمہ دار نے اس بارے میں دوٹوک کہا ہے '' ہمارے پاس جو بھی ہے ہم فراہم کرنے کی اہلیت رکھتے ہیں۔ ہم آج بھی اپنے دفاع کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

اس افسر نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر رپورٹرز کو بتایا ' امریکہ کسی کو بھی اسلحہ دینے سے پہلے مسلسل اپنی دفاعی تیاریوں اور اس سلسلے میں ترجیحات کا جائزہ لیتا رہتا ہے۔ '

واضح رہے امریکہ نے یوکرین کو مختلف ہتھیار فراہم کیے ہیں۔ ان میں 155 ملی میٹر کے توپ خانے میں کام آنے والے گولے بھی شامل ہیں۔

پینٹا گون کے یہ ذمہ دار وال سٹریٹ جنرل کی اس رپورٹ پر تبصرہ کر رہے تھے جس میں کہا گیا تھا کہ یوکرین کو 155 ایم ایم کی فراہمی کے بعد امریکہ کے پاس اس حوالے سے کمی ہو گئی ہے اور امریکہ کمفرٹ زون میں نہیں رہا ہے۔

دریں اثنا پینٹاگون کے ایک سابق ذمہ دار نے العربیہ سے بات کرتے ہوئے کہا یہ بات مناسب نہیں ہے کہ 155 ایم ایم کے شیل پینٹاگون کے پاس کم ہو گئے ہیں۔ امریکہ کے پاس جنگی ضروریات کے لیے وافر مقدار میں اسلحہ موجود ہے۔'

پچھلے ہفتے یوکرین کے لیے 3 ارب ڈالر مالیت کے ہتھیار یوکرین کو دینے کے بعد سے اب تک صدر جوبائڈن کیف کو مجموعی طور پر اب تک 13،5 ارب ڈالرلر کا اسلحہ فراہم کر چکا ہے۔

اس پس منظر میں پینٹاگون کے ذمہ دار نے کہا ' ہم امریکہ کی جنگی تیاری کے لیے بڑی سنجیدگی سے لیتے ہیں اس لیے کوئی کوتاہی نہیں برتی جاتی۔' خیال رہے اس سے پہلے بھی پینٹا گون کے ذ مہ دار اسی طرح کی وضاحت کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں