جوہری 'واچ ڈاگ' اور ایران نیوکلیئر معاہدے کے درمیان کوئی تعلق نہیں: وائٹ ہاوس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکہ نے واضح کیا ہے کہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدہ اور بین الاقوامی سطح پر یور ینیم کی افزودگی کو مانیٹر کرنے والے ادارے دونوں کا الگ الگ دائرہ کار ہے۔ ان کا باہم کوئی تعلق نہیں ہے۔ وائٹ ہاوس کی پریس سیکرٹری کرائین جین نے یہ بات جمعہ کے روز کہی ہے۔

وائٹ ہاوس کی پریس سیکرٹری نے کہا انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی [آئی اے ای اے] ایران میں تین غیر علانیہ جوہری سائٹس کا پتہ چلا چکی ہے۔ ایرانی وزیر کارجہ نے اسی ہفتے مطالبہ کیا تھا کہ انٹر نیشنل اٹامک انرجی ایجنسی اپنی سیاسی انداز کی مانیٹرنگ ترک کر دے۔ جبکہ واشنگٹن کا اس بارے میں مسلسل کہنا ہے کہ جوہری مادے اور جوہری واچ ڈاگ کا کام الگ الگ ہے۔

واجح رہے ایران نے جمعرات کو یورپی یونین کی طرف سے تجاویز پر ریسپانس کیا ہے۔ ان تجاویز میں ذکر ہے کہ جوہری معاہدہ 2015 کس طرح بحال ہو گا۔ امریکہ، متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کو خوف ہے کہ ایران اس معاہدے کی آڑ میں ایک جوہری بم بنا سکتا ہے۔ جبکہ ایران اس کی تردید کرتا ہے

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں