بھارت:ٹاٹا سنز کے سابق چیئرمین سائرس مستری سڑک حادثے میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارت کے معروف صنعتی کاروباری گروپ ٹاٹا سنز کے سابق چیئرمین 54 سالہ سائرس مستری اتوار کے روز تجارتی دارالحکومت ممبئی کے قریب ایک سڑک حادثے میں ہلاک ہو گئے ہیں۔

یہ حادثہ اتوار کی سہ پہرممبئی سے قریباً 100 کلومیٹر دور واقع قصبے پالگھر میں پیش آیا ہے۔ پالگھر کے اعلیٰ پولیس عہدہ دار بی پاٹل نے بتایا کہ مستری تین دیگر افراد کے ساتھ گجرات سے ممبئی جا رہے تھے۔

ممبئی پولیس کے ایک سینئر عہدہ دار نے بتایا مستری کی کار تیزرفتاری کے سبب شاہراہ میں ایک ڈیوائیڈر سے ٹکرا گئی تھی اور وہ موقع پر ہی ہلاک ہوگئے تھے۔مستری کے اہل خانہ اور ٹاٹا سنز نے فوری طور پر حادثے کے بارے میں کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

مستری کے انتقال کی خبر ملتے ہی بھارت کے متعدد ممتاز سیاست دانوں اور صنعت کاروں نے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔

بھارت کے سڑک ٹرانسپورٹ کے وزیر نتن گڈکری نے ایک ٹویٹر پوسٹ میں کہا کہ ریاست مہاراشٹر کے علاقے پالگھر کے قریب ایک سڑک حادثے میں ٹاٹا سنز کے سابق چیئرمین سائرس مستری جی بدقسمتی سے چل بسے ہیں۔ان کی موت کے بارے میں جان کربہت دکھ ہوا ہے۔

واضح رہے کہ سائرس مستری کو 2016 میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کی بغاوت میں ٹاٹا سنز کے چیئرمین کے عہدے سے معزول کردیا گیا تھا۔اس کے بعد ایک طویل قانونی کش مکش چھڑ گئی تھی جس پر بالآخر بھارت کی اعلیٰ عدالت نے ٹاٹا گروپ کے حق میں فیصلہ دیا تھا۔ٹاٹا سنز300 ارب ڈالر مالیت کے کاروباری اثاثوں کے مالک ہیں۔ٹاٹا گروپ کی ہولڈنگ کمپنی نمک سے سافٹ ویئر تک مختلف کاروبار کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں