سعودی عرب: حادثے میں طالبہ کی انگلی کا واقعہ، محکمہ تعلیم کا موقف کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے علاقے جازان اسکول میں زیر تعلیم ایک طالبہ کی حادثے میں انگلی کٹنے کے واقعے کے بعد محکمہ تعلیم کا موقف سامنے آیا ہے۔

جازان کے محکمہ تعلیم کا کہنا ہے کہ ایک مقامی اسکول کی چوتھی جماعت کی طالبہ شموع محمود العریشی کی انگلی اس وقت کٹ گئی جب اچانک کمرہ جماعت کا دروازہ بند کرتے ہوئے اس کا ہاتھ دروازے میں آگیا۔

زخمی بچی کے والد نے بتایا کہ ان کی بچی کا ہاتھ کمرہ جماعت کے دروازے میں آکر زخمی ہوا اور بچی کی ایک انگلی بری طرح کچلی گئی ہے۔ انہوں نے انتظامیہ سے اسکول کے کمروں کومحفوظ بنانے کی ضرورت پر زور دینے کے ساتھ اس واقعے کی تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ بچی کو جازان کے شاہ فہد ہسپتال منتقل کیا تھا جہاں کل اتوار کو اس کی انگلی کی سرجری کی جائے گی۔

طالبہ کے والد نے کلاس روم کے دروازے کی خرابی پربات کرتے ہوئے اس پر حیرانگی کا اظہار کا اور حفاظتی آلات میں غفلت اور لاپرواہی قرار دیا۔

جازان میں محکمہ تعلیم نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا زخمی بچی کے علاج کے فوری طبی امداد فراہم کی گئی ہے اور اس کا علاج مکمل ہونے تک اس کی دیکھ بھال کی جائے گی۔ محکمہ تعلیم نے اسکول کے کمروں اور دروازوں میں تمام ضروری حفاظتی انتظامات کو یقینی بنانے اور اس واقعے کی تحقیقات کی یقینی دہانی کرائی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں