سعودی عرب: مختلف علاقوں میں منشیات کے اسمگلروں کے خلاف کارروائی، قریباً150 گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے سرحدی محافظوں نے مملکت کے مختلف علاقوں میں چھاپامار کارروائیوں کے دوران میں منشیات کی بھاری مقدار قبضے میں لے لی ہے اور146 مشتبہ اسمگلروں کو گرفتار کر لیا ہے۔

ٹویٹرپر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں وزارت داخلہ نے بتایا کہ سرحدی محافظوں نے نشہ آور پودے کھٹ کی 48.6 ٹن سے زیادہ مقدار،ڈیڑھ ٹن سے زیادہ حشیش اور ایمفیٹامائن کی 6 لاکھ 34 ہزار گولیاں قبضے میں لے لی ہیں۔

وزارت نے بتایا کہ گرفتارشدگان میں 19 اسمگلر سعودی شہری ہیں جبکہ 127 غیرملکی ’’سرحدی سلامتی کے نظام کی خلاف ورزی‘‘ کے مرتکب پائے گئے ہیں۔ان کا تعلق یمن، ایتھوپیا، صومالیہ، عراق، مصر اور پاکستان سے ہے۔سعودی حکام نے منشیات کی اسمگلنگ کی کوششوں کو عسیر، نجران، جازان اور تبوک میں ناکام بنایا ہے۔

گذشتہ ماہ سعودی عرب کی سکیورٹی فورسز نے ایک ہی کارروائی میں ایمفیٹامائن کی قریباً چار کروڑ سترلاکھ گولیاں ضبط کی تھیں۔مملکت میں منشیات کے اسمگلروں کے خلاف یہ سب سے بڑی کارروائی تھی۔

سعودی حکام نے حالیہ مہینوں میں ملک میں منشیات کی اسمگلنگ کے خلاف اقدامات تیز کیے ہیں۔انھوں نے نشہ آور دواؤں کیپٹاگون اور ایمفیٹامائن کی لاکھوں کی تعدادمیں گولیوں کو ضبط کیا ہے۔ان میں زیادہ مقدار کو شام اور لبنان سے سعودی عرب کی جانب بھیجا گیا تھا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب نے لبنان سے اسمگلنگ کی بڑھتی ہوئی کارروائیوں کے ردعمل میں 2021 میں لبنانی پھلوں اور سبزیوں کی درآمد پر پابندی عاید کردی تھی۔

یہ فیصلہ اس وقت کیا گیا جب سعودی کسٹمز نے انار کے اندر بھری ہوئی کیپٹاگون کی پچاس لاکھ سے زیادہ گولیاں اسمگل کرنے کی کوشش ناکام بنا دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں