بیٹی کے منگیتر کے ساتھ جھگڑے کے بعد لڑکی کا والد چل بسا

لڑکی کی والد کی وفات پرمدد کے لیے ویڈیو وائرل، پولیس کی کارروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فیس بک پر لائیو نشریات میں ایک لڑکی کے رونے کی ویڈیو پھیلنے کے بعد مصری وزارت داخلہ نے اس کا نوٹس لیتے ہوئے اس کی مزید تفصیلات بیان کی ہیں۔

یہ واقعہ مصر کی بحیرہ گورنری میں پیش آیا جہان لڑکی کو اس کے گھر پر حملے کے دوران تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

وزارت داخلہ نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر ایک بیان کے ذریعے واضح کیا کہ لڑکی کے والد اسپتال پہنچے تھے اور ان کا انتقال ہوگیا تھا۔

منگنی کی تقریب ماتم میں تبدیل

پولیس نے بتایا کہ لڑکی کا منگیتر شادی پر اصرار کر رہا تھا جب کہ لڑکی کے والد نے فوری شادی سے انکار کیا جس پر ان کے درمیان جھگڑا ہوا۔

فوت ہونے والے شخص کی بیوہ نے تفتیش کے دوران تصدیق کی کہ اس کا شوہر دل کے عارضے میں مبتلا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اپنی بیٹی کے منگیتر کی بدتمیزی سے بہت پریشان ہوا اور وہیں سڑک پر گر کر بے ہوش ہوگیا۔

خاتون نے بیٹی کے منگیتر پر اپنے شوہر کے قتل کا الزام بھی لگایا۔

ملزم انکاری

بتایا جاتا ہے کہ البحیرہ کے ادکو پولیس سٹیشن نے تصدیق کی ہے کہ لاش کے طبی معائنے سے معلوم ہوا ہے کہ اس پر ظاہری طور پر کوئی زخم نہیں تھا۔

اس نے یہ بھی اشارہ کیا کہ متوفی بیماریوں میں مبتلا تھا۔ اس کی موت غالبا اس کی دل کی بیماری کا نتیجہ ہے۔ اس کی لڑکی کے منگیتر کا کوئی کردار نہیں۔

قابل ذکر ہے کہ نوجوان خاتون کی ویڈیو نے سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر تنازع کو جنم دیا۔ ویڈیو سامنے آنے کے بعد پولیس حرکت میں آئی اور اس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر واقعے کی رپورٹ درج کرلی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں