سعودی عرب ’نیوم بیچ گیمز 2022‘ میں عالمی کھلاڑیوں کے استقبال کے لیے تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بحیرہ احمر کے کنارے واقع سعودی عرب کے فلیگ شپ کاروباری اور سیاحتی ترقیاتی منصوبہ نیوم نے کھیلوں کے ایک نئے میگا ایونٹ کی نقاب کشائی کی ہے۔نیوم بیچ گیمز 2022 کے عنوان سے ان کھیلوں میں 25 ممالک کے عالمی کھلاڑی حصہ لیں گے۔

چھے ہفتے تک جاری رہنے والے یہ کھیل 19 اکتوبر سے شروع ہوں گ۔ ان میں کائٹ سرفنگ، ٹرائیتھلون، 3ایکس 3 باسکٹ بال، بیچ سوکر اور پہاڑوں پر بائیسکل سواری سمیت پانچ کھیل شامل ہیں۔ یہ مستقبل کے میگا سٹی میں منعقد ہونے والا بین الاقوامی کھیلوں کا تازہ ایونٹ ہے۔

نیوم کے سی ای اونظمی النصر نے ایک بیان میں کہا کہ ہمیں نیوم بیچ گیمز کی میزبانی کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے۔ایک متنوع مقام پرمنعقد ہونے والے پانچ مقبول کھیلوں میں مقامی اور بین الاقوامی حقوق رکھنے والوں کو اکٹھا کیا جائے گا۔ نیوم بے مثال قدرتی خوب صورتی کی جگہ ہے اور یہ اس بات کا مثالی پس منظر ہوگا کہ مختلف چیلنجنگ کھیلوں میں عالمی معیار کے کھلاڑیوں کے درمیان دلچسپ مقابلے ہوں گے۔

اسپورٹ ایونٹ کا آغاز پہلے پانچ دنوں کے دوران ورلڈ کپ کائٹ سرفنگ سے ہوگا جس کے بعد 29 اکتوبر کو شارٹ کورس ٹرائیتھلون کا اولمپک سطح کا مقابلہ ہوگا۔دیگر مقابلوں میں ایک بین الاقوامی 3ایکس 3 باسکٹ بال ٹورنامنٹ اور چار روزہ بیچ فٹ بال مقابلے شامل ہیں۔ ان میں دنیا بھر سے 12 ٹیمیں اس ٹورنامنٹ میں حصہ لیں گی۔مجموعی طور پر نیوم ان چار کھیلوں میں 25 سے زیادہ ممالک کی میزبانی کرے گا۔

اس کے بعد نیوم بیچ گیمز 2022 9 دسمبر کو ڈیزرٹ ماؤنٹین بائیکنگ ریس کے ساتھ اختتام پذیر ہوں گی جس میں دنیا بھر سے 220 مرد اورخواتین بائیسکل سواروں کی چار مرحلوں پر مشتمل ایونٹ میں میزبانی کی جائے گی۔اس میں 80 سے 120 کلومیٹر فی مرحلہ فرق ہوگا۔

نیوم میں کھیل کے منیجنگ ڈائریکٹر جان پیٹرسن نے مزید کہا کہ ہم عالمی معیار کے مقابلوں کی میزبانی کرنے کے لیے پرجوش ہیں کیونکہ ہمارا مقصد کھیلوں کا ایک ایسا مرکز تیارکرنا ہے جو ہمارے ترقی پذیر کھیلوں کے ماحولیاتی نظام میں معاون ثابت ہوگا۔کھیلوں کے اہم اداروں کے ساتھ شراکت داری سے اعلیٰ کارکردگی کے کلچر کی تعمیر کے ہمارے اہداف کو تقویت ملے گی اور خطے بھر کے کھلاڑیوں کی اگلی نسل کو ترغیب ملے گی۔

جدید ٹیکنالوجی اور سہولتوں سے آراستہ نیوم شہر پر 500 ارب ڈالر لاگت آئے گی۔ نیوم کے ترقیاتی منصوبوں میں اسمارٹ ٹاؤنز اور شہر، بندرگاہیں اور کاروباری علاقے، تحقیقی مراکز، کھیلوں کے میدان اور تفریحی مقامات اور سیاحتی مراکز شامل ہوں گے۔

یہ شہر 26,500 مربع کلومیٹررقبے میں پھیلا ہوگا اور صنعتی اور لاجسٹک علاقوں سمیت متعدد زونز پر مشتمل ہوگا۔منصوبے کے مطابق نیوم شہر 2025ء تک پایہ تکمیل کو پہنچے گا۔اس کے منصوبوں میں ہوائی اڈوں کا ایک نیٹ ورک بھی شامل ہے اور اس میں ایک بین الاقوامی نیٹ ورک بھی شامل ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں