روس اور یوکرین

امریکہ کا یوکرین کو مزید ہتیھار دینے کا اعلان، مجموعی امداد 15 ارب ڈالر سے متجاوز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سات ماہ قبل روس اور یوکرین کی جنگ کے آغاز سے امریکہ کی جانب سے یوکرین کی مدد جاری ہے۔

جمعرات کو امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے وائٹ ہاؤس کو ارسال میمو کے مطابق امریکی صدر بائیڈن نے روس کیخلاف جنگ میں یوکرینی فوج کیلئے 600 ملین ڈالر کے نئے ہتھیاروں کے پیکج کا اعلان کردیا۔

بائیڈن نے امریکی ذخائر میں موجود زائد ہتیھاروں کی منتقلی کے اپنے اختیارات کو استعمال کرتے ہوئے یوکرین کیلئے اس امداد کا اعلان کیا ہے۔

ھیمارس سسٹمز اور ہاوٹزرز

جاری میمو میں یہ نہیں بتایا گیا کہ اس پیکج میں کونسے ہتیھار یوکرینی فوج کو بھیجے جائیں گے، تاہم رائٹرز کے مطابق ذرائع نے بتایا کہ پیکج میں یوکرین کیلئے مزید ھمارس میزائل اور دیگر سامان شامل ہے۔

ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی استدعا کرتے ہوئے یہ بھی بتایا کہ پیکج میں دور تک گولے داغنے والے ہاؤٹزرز کے لئے گولہ بارود بھی شامل ہو گا۔ امریکی میمو میں یہ بھی کہا گیا کہ یہ پیکج فوجی تربیت کے لیے استعمال کیا جائے گا۔

سامان، خدمات اور تربیت

امریکی صدارتی دفتر کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ یہ امداد سامان اور خدمات کے ساتھ ساتھ فوجی تربیت کا بھی احاطہ کئے ہوئے ہے۔ بیان میں بالخصوص اس پیکج میں شامل ہتھیاروں کی وضاحت نہیں کی گئی۔

امریکہ کا یہ نیا اعلان ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب یوکرین کی فوج نے دو ہفتوں سے روس کے خلاف بڑے پیمانے پر جوابی حملے شروع کئے ہوئے ہیں اور بعض علاقے روس سے واپس بھی لئے ہیں۔

خیال رہے 24 فروری کو روسی افواج یوکرین میں داخل ہوئی تھیں۔ اس وقت جنگ کے آغاز سے لیکر اب تک امریکہ یوکرین کو 15 ارب ڈالر سے زیادہ کی فوجی امداد فراہم کر چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں