ایزوم میں اجتماعی قبر سے 440 لاشیں ملی ہیں: زیلینسکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرین کے صدر زیلینسکی نے دعویٰ کیا ہے کہ یوکرین کے صوبہ خار کئیف کے شہر ایزوم سے ایک اجتماعی قبر ملی ہے۔یوکرینی فوج نے چند روز قبل اس شہر کو روسیوں سے دوبارہ حاصل کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق اس قبر سے 440 لاشیں برآمد ہوئیں۔

اپنے روزانہ کے ویڈیو پیغام میں یوکرینی صدر نے مدفون لاشوں کی تعداد بتائی نہ ہی ان کی موت کی وجوہات بتائیں۔ انہوں نے کہا ’’ہم جاننا چاہتے ہیں کہ یوکرین کے علاقوں میں روسی قبضہ کی وجہ کیا ہے؟‘‘

تحقیقات کرائی جائیں گی

انہوں نے اجتماعی قبر کے متعلق تحقیقات کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہمیں کل مزید تصدیق شدہ اور واضح معلومات ملنے کی امید ہے۔ اس دوران زیلینسکی نے ایزیوم شہر کے علاقوں بوچا اور ماریوپول کا معائنہ کیا، یہ دونوں علاقے روسی مظالم کی علامت بن چکے ہیں۔

موت روس کے متروکہ علاقوں کا ترکہ

یوکرائنی صدر نے کہا کہ روس اپنے پیچھے ہر جگہ صرف اموات چھوڑ کر جا رہا ہے جس کیلئے اسے جوابدہ ہونا ہو گا۔ دنیا کو چاہیے کہ اس جنگ کیلئے روس سے جواب طلب کرے۔ روس کے مواخذہ کیلئے ہم ہر ممکن کوشش کریں گے۔

دوسری طرف خار کئیف میں پولیس تفتیس کار سرہی پولوینوف نے وضاحت کی کہ قبرستان سے 440 سے زیادہ لاشیں ملی ہیں۔ کچھ لاشیں بمباری اور فضائی حملوں میں مارے گئے لوگوں کی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہر لاش کا فرانزک معائنہ کیا جائے گا۔ میں کہہ سکتا ہوں کہ یہ آزاد کرائے گئے علاقوں کے ایک بڑے قصبے میں سب سے بڑا تدفین کا مقام ہے۔ انہوں نے اشارہ کیا کہ مرنے والوں میں سے کچھ زمینی فائرنگ اور کچھ فضائی حملوں میں مارے گئے ہیں۔

روسی پسپائی

واضح رہے اس ہفتے کے آغاز میں ہزاروں روسی فوجیوں نے ایزوم سے انخلا کیا تھا۔ کوبیانسک اور ایزیوم جیسے شہری مراکز کے اس کنٹرول نے روس کی مشرق میں اپنی فرنٹ لائن محاذوں پر سپلائی پہنچانے کی صلاحیت کو دھچکا پہنچایا ہے۔ اس کے بعد مشرقی یوکرین پر روسی کنٹرول بہت کم ہو جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں