یوکرین: خارکیف میں 10 روسی ٹارچرسیل،ایزوم میں اجتماعی قبرکا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پچھلے کچھ دنوں کے دوران روسی افواج کے انخلا کے بعد شمال مشرقی یوکرین کے شہرخارکیف اوراطراف کے شہروں پر یوکرینی فوج نے دوبارہ اپنا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔

یوکرینی فوج کی طرف سے خارکیف کا کنٹرول دوبارہ حاصل کرنے کے بعد یہ معلوم ہوا ہے کہ شہر میں روسی فوج نے زیرحراست افراد پر تشدد کے لیے کم سے کم دس ٹارچر سیل بنا رکھے تھے۔

یوکرین کے نیشنل پولیس ڈائریکٹر ایگور کلیمینو نے جمعہ کے روز بتایا کہ خارکیف سے دس "ٹارچر روم" دریافت ہوئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب تک میں ان دس اذیتوں خانوں کے بارے میں بات کرسکتا ہوں جو بیہاکیف کے قصبوں میں سامنے آئے ہیں۔دو ٹارچرسیل بالاکلیا میں پائے گئے ہیں۔

اجتماعی قبرمیں عام شہریوں کی لاشیں

جہاں تک اجتماعی قبرستان کا تعلق ہے جو کل آئیمیم میں دریافت ہوا تھا ، اس نے نشاندہی کی کہ اس کے بیشتر شہری شہری ہیں۔

یوکرین کے صدر زیلینسکی نے دعویٰ کیا ہے کہ یوکرین کے صوبہ خار کئیف کے شہر ایزوم سے ایک اجتماعی قبر ملی ہے۔یوکرینی فوج نے چند روز قبل اس شہر کو روسیوں سے دوبارہ حاصل کیا تھا۔ ذرائع کے مطابق اس قبر سے 440 لاشیں برآمد ہوئیں۔

اپنے روزانہ کے ویڈیو پیغام میں یوکرینی صدر نے مدفون لاشوں کی تعداد بتائی نہ ہی ان کی موت کی وجوہات بتائیں۔ انہوں نے کہا ’’ہم جاننا چاہتے ہیں کہ یوکرین کے علاقوں میں روسی قبضہ کی وجہ کیا ہے؟‘‘

تحقیقات کرائی جائیں گی

انہوں نے اجتماعی قبر کے متعلق تحقیقات کا عندیہ دیتے ہوئے کہا ہمیں کل مزید تصدیق شدہ اور واضح معلومات ملنے کی امید ہے۔ اس دوران زیلینسکی نے ایزیوم شہر کے علاقوں بوچا اور ماریوپول کا معائنہ کیا، یہ دونوں علاقے روسی مظالم کی علامت بن چکے ہیں۔

موت روس کے متروکہ علاقوں کا ترکہ

یوکرائنی صدر نے کہا کہ روس اپنے پیچھے ہر جگہ صرف اموات چھوڑ کر جا رہا ہے جس کیلئے اسے جوابدہ ہونا ہو گا۔ دنیا کو چاہیے کہ اس جنگ کیلئے روس سے جواب طلب کرے۔ روس کے مواخذہ کیلئے ہم ہر ممکن کوشش کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں