آشنا سے شادی کے لیے تین بچوں اور شوہرکوزہر دے کرہلاک کرنے والی خاتون کو سزائے موت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصر کی ایک فوج داری عدالت نے 26 سالہ خاتون اور اس کے مبینہ آشنا کوتین بچوں اور خاتون کے شوہرکوزہر دے کرہلاک کرنے کے جرم میں سزائے موت سنائی ہے۔

جنوبی قاہرہ کی قنا گورنری کے علاقے نجع حمادی کی فوجی عدالت نے خاتون اور اس کے عاشق کو سزائے موت سنائی۔

یہ واقعہ چند ماہ قبل اس وقت پیش آیا جب سنٹرل ہسپتال نے فارش آؤٹ سنٹر کو اطلاع دی کہ اسے سنٹر کا رہائشی 32 سالہ شخص کومہ میں پڑا ہے اور اس کے تین بچے زہریلا جوس پینے کے بعد ہلاک ہو گئے ۔ یہ تینوں بچے ابتدائی طبی امداد کے دوران ہی دم توڑ گئے۔

سکیورٹی فورسز کی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ مقتول کی بیوی اور بچوں کی ماں جو کہ ایک گھریلو خاتون ہیں، کے ایک 26 سالہ ڈرائیور کے ساتھ رومانوی تعلقات تھے۔ اس خاتون نےاپنے شوہرسے جان چھڑا کراس ڈرائیور کے ساتھ تعلقات قائم کرنے کے لیے اپنے بچوں کو زہر دے کر ہلاک کردیا۔

مقامی میڈیا کے مطابق ملزمان نےعدالت میں غیر قانونی تعلقات کا اعتراف کیا۔ خاتون نے کہا کہ وہ شوہر اور بچوں سے جان چھڑانے پر رضامند ہوگئی تھی۔ چنانچہ عاشق ایک زہریلا مادہ لایا اور اسے 4 جوس کے ڈبوں میں ڈال کر بیوی کودیا تاکہ اسے بچوں اور شوہر کو پلا کرموت کی نیند سلا دیا جائے۔ خاتون نے منصوبہ بنایا کہ اس طرح شوہر کے خاندان کو یہ کہہ کرگمراہ کیا جاسکے گا کہ ان کی موت خراب جوس پینے سے ہوئی ہے۔

اس وقت پبلک پراسیکیوشن نے ملزمان کو حراست میں لے کر فوجداری عدالت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں