ملکہ الزبتھ کی آخری رسومات کی براہ راست کوریج، لمحہ بہ لمحہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانیہ کی ملکہ الزبتھ کی آخری رسومات جاری ہیں۔ 70 سالہ دور حکومت میں قوم کو متحد کرنے والی محبوب شخصیت کی موت کے بعدآج پیرکو انہیں شاہی قبرستان میں دفن کیا جائے گا۔ ملکہ کی آخری رسومات کی تقریبات میں برطانوی بادشاہ سمیت عالمی شخصیات اور رہ نما موجود ہیں۔

سوموار کی صبح 11 بجے بلوط کی لکڑی سے تیار کردہ شاہی پرچم میں لپٹا تابوت جسے شاہی تاج سے سجایا گیا تھا ابر آلود آسمان کے نیچے توپ کے رتھ پر نمودار ہوا۔ آنجہانی ملکہ کےتابوت کوفوجی جلوس میں ویسٹ منسٹر ایبی لے جایا گیا۔

شاہی جنازے جلوس میں ملکہ کا بڑا بیٹا اور موجودہ بادشاہ کنگ چارلس اور شاہی خاندان کے سینیر افراد تابوت کے پیچھے پیچھے چل رہے تھے، جس کے پس منظر میں گھنٹی بج رہی تھی۔

پارلیمنٹ کے تاریخی ویسٹ منسٹر ہال سے قریبی ویسٹ منسٹر ایبی اور آخر کار ونڈسر کیسل تک ملکہ کے تابوت کو دیکھنے کے لیے دسیوں ہزارلوگ سڑکوں پر قطار میں کھڑے تھے جہاں ملکہ کو ان کے آنجہانی شوہر شوہر کے ساتھ دفن کیا جائے گا۔

ملکہ کی وفات پر امریکی صدر جوبائیڈن نے گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ برطانوی بادشاہوں کی طویل ترین مدت تخت پرگزارنے کے بعد 96 سال کی عمر میں انتقال کرنے والی ملکہ کے لیے ہرآنکھ اشک بار ہے۔امریکی صدر نے انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کی خدمات کے لیے تقریباً دنیا بھر میں عزت پائی جاتی تھی۔ انہوں نے 70 سال سے خوش قسمت وقت گذارا۔

برطانیہ بھر سے اور بیرون ملک سے آنے والے ہجوم کے درمیان، کچھ لوگ شاہی جلوس کی جھلک دیکھنے کے لیے روشنی کے کھمبوں پرچڑھ گئے۔

سوگواروں میں جاپان کے شہنشاہ ناروہیٹو، چین کے نائب صدر وانگ کیشان اور جنوبی افریقہ کے صدر سیرل رامافوسا بھی شامل ہیں۔ آخری رسومات میں تخت کے موجودہ وارث شہزادہ ولیم، نو سالہ شہزادہ جارج اور سات سالہ شہزادی شارلٹ بھی شریک ہیں۔

کنگ چارلس نے اتوار کو اپنی مادر ملکہ الزبتھ کی وفات کے بعد ہمدردی کے پیغامات پر برطانوی عوام اور دنیا بھر کے لوگوں کا شکریہ ادا کیا۔

کنگ چارلس جو اپنی والدہ کی موت کے بعد سے برطانیہ میں ہیں نے کہا، پچھلے 10 دنوں کے دوران میں اور میری اہلیہ اس ملک اور دنیا بھر سے ملنے والے تعزیت اور حمایت کے بہت سے پیغامات سے بہت متاثر ہوئے ہیں۔

لندن، ایڈنبرا، ہلزبرو اور کارڈف میں ہم ناقابل یقین حد تک ہر اس شخص سے متاثر ہوئے ہیں جنہوں نے آنے اور میری پیاری والدہ ملکہ کی زندگی بھر کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے پریشانی کا سامنا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں