امریکی کانگریس نے یوکرین کیلئے 12 ارب ڈالر امداد مقرر کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی ارکان کانگریس ان دنوں ایک عارضی اخراجات کے بل پر بحث کر رہے ہیں۔ بحث کےدوران ارکان نے یوکرین کو 12 ارب ڈالر فوجی اور اقتصادی امداد دینے پر اتفاق کرلیا۔ بائیڈن انتظامیہ کی درخواست پر کانگریس کا حالیہ فیصلہ ریپبلکن اور ڈیموکریٹک دونوں امریکی پارٹیوں کی کئیف کیلئے حمایت کی عکاسی کر رہا ہے۔

سکائی نیوز کے مطابق اس امداد میں 4.5ارب ڈالر سے یوکرین کی دفاعی صلاحیت میں اضافہ کیا جائے گا ۔ اس میں سے 2.7 ارب ڈالر سے فوجی، انٹیلی جنس اور دیگر دفاعی سازو سامان بھی یوکرین کو دیا جائے گا۔

اس امداد میں وہ 4.5 ارب ڈالر بھی شامل ہونگے جن کے ذریعہ یوکرین میں اگلی سہ ماہی کے دوران حکومت کے بجٹ کو براہ راست سپورٹ کیا جائے گا۔ ایک سرکاری عہدیدار نے بتایا کہ یوکرینی صدر زیلنسکی کی انتظامیہ کو ملازمین کی ضروری تنخواہوں کی ادائیگی ، تنازعات سے فرار ہونے والے شہریوں کی مدد اور دیگر اخراجات کیلئے یہ رقم ادا کی جارہی ہے۔

واضح رہے اس ماہ بائیڈن نے کانگریس سے کہا تھا کہ وہ یوکرین کو 11.7 ارب ڈالر مالیت کی نئی ہنگامی فوجی اور اقتصادی امداد فراہم کرنے کی منظوری دے۔ یہ ادائیگی عارضی اخراجات کے بل کے تحت کی جائے۔

خیال رہے 7 ماہ سے جاری جنگ میں واشنگٹن پہلے ہی اپنے اتحادی یوکرین کو اربوں ڈالر کی سکیورٹی اور اقتصادی امداد بھیج چکا ہے۔

امریکی کانگریس کے پاس جمعہ نصف شب تک بل کی منظوری کا وقت ہے۔ امریکی پیکج جس کا ابھی اعلان نہیں کیا گیا میں جنگ کے اثرات سے نمٹنے کیلئے اور مستقبل میں توانائی کے اخراجات کم کرنے کیلئے امریکی توانائی کے شعبہ کیلئے 2 ارب ڈالر بھی شامل ہیں۔ پیکج سے آگاہ ذرائع نے بتایا کہ کہ فنڈنگ کی درخواست میں افغان مہاجرین کی آباد کاری کیلئے فنڈز بھی شامل ہوں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں