سعودی عرب:آبی حیات کے نئے مرکزمیں دنیا کی بڑی انسانی ساختہ چٹانوں کی نقاب کشائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب نے ایک بہت بڑا نیاعمیق آبی حیات کا مرکز قائم کیا ہے جو سب سے بڑی انسانی ساختہ چٹانوں میں سے ایک کاگھرہوگااورزائرین کو پانی کے اندر چلنے ، نایاب آبی حیات کے ساتھ اٹکھیلیاں کرنے اور آبدوز میں بحیرہ احمر کی گہرائیوں میں غوطہ لگانے کے قابل بنائے گا۔

بحیرہ احمرکی ترقیاتی کمپنی ریڈسی ڈیولپمنٹ کمپنی (ٹی آرایس ڈی سی) نے اپنے جدیدترین میرین لائف انسٹی ٹیوٹ کے منصوبوں کا اعلان کیاہے۔ان کا مقصد زائرین کو سعودی عرب کی قیمتی مرجان کی چٹانوں کاکثیرالجہت پانی کے اندر تجربہ پیش کرنا ہے جبکہ تحفظ پرمبنی تحقیق کوتیزکرناہے۔

سعودی عرب کے مغربی ساحل پرامالامنزل کے اندر سیٹ اور ٹرپل بے کے واٹر فرنٹ پر واقع، 10،340 مربع میٹرانسٹی ٹیوٹ تین سطحوں پر مشتمل ہوگا-ایک سطح زمین سے اوپر اور دو نیچے۔اوراس سے بحیرہ احمراورمرینا کے دل فریب مسحورکن مناظر بھی نظرآئیں گے۔

سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی (ایس پی اے) نے بتایا کہ اس کا مقصد تعلیمی سیروں کا ایڈونچر کے ساتھ امتزاج ہے اوراس طرح تعلیمی دوروں کا ایک نیا تجربہ حاصل ہوگا۔

ٹی آر ایس ڈی سی کے سی ای او جان پگانو نے کہا کہ ’’10 زونز کے ساتھ حقیقت پرمبنی تجربات سے لے کر رات کے غوطہ خوری تک سب کچھ مہیا ہوگا۔ یہ سائنسی برادری کے لیے اپنے ماحولیاتی منصوبوں کومؤثرطریقے سے آگے بڑھانے کے لیے جگہیں فراہم کرتے ہیں، میرین لائف انسٹی ٹیوٹ ناقابل یقین حد تک انوکھا ہے۔یہ نہ صرف عالمی سبز اور نیلے رنگ کی اختراعات کو فروغ دے گا، بلکہ اس سے سعودی عرب کوان مسافروں کوپُرکشش پیش کش میں مدد ملے گی جو اپنی زندگیوں کوبہتر بنانے والے سفر کے خواہاں ہیں‘‘۔

انھوں نے کہا کہ یہ انسٹی ٹیوٹ امالا میں ٹرپل بے مرینا میں واقع ہے۔سعودی عرب کے ترقی پذیر بحیرہ احمر کے ساحل کی حفاظت اور ترقی کے لیے ہمارے وسیع تر عزائم ہیں۔منصوبوں کے ہمارے توسیعی پورٹ فولیو کے ذریعے، ہم دنیا کے ساتھ اپنی قیمتی سائنسی دریافتوں کا اشتراک کریں گے اور اپنے مہمانوں کومرجان کی چٹانوں کی حقیقی خوبصورتی کا تجربہ کرنے کے قابل بنائیں گے‘‘۔

توقع ہے کہ اس میں کسی بھی وقت 650 افراد کی میزبانی کی جائے گی ، یہ سہولت دنیا کی سب سے بڑی انسانی ساختہ چٹانوں میں سے ایک کا گھرہوگی۔اس کی پیمائش حیرت انگیز طور پر 40 میٹر لمبی اور 10 میٹر گہری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں