شوہر کی دوسری شادی پرخاتون نے اپنے دو بچے بالکونی سے پھینک دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شوہر کی دوسری شادی اورسوتن کا صدمہ مصری خاتون سے برداشت نہ ہوسکا۔ سوتن سے نفرت میں وہ آپے سے باہرہوگئی اور مامتا کی شفقت کو بھی بھول بیٹھی۔ خاتون نے اپنے دو بچوں کو مکان کی بالکونی سے اٹھا کر باہر پھینک دیا۔

اس واقعے میں ایک بچہ فوت جب کہ دوسرا شدید زخمی ہوگیا۔

یہ واقعہ اس وقت شروع ہوا جب دقہلیہ گورنری سکیورٹی ڈائریکٹوریٹ کو جمصہ پولیس ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے ایک اطلاع موصول ہوئی جس میں کہا گیا تھا کہ ایک گاؤں کے رہائشیوں سے ایک رپورٹ موصول ہوئی ہے، جس میں ایک خاتون پر اپنے دو بچوں کو تیسری منزل سے پھینکنے کا الزام لگایا گیا ہے۔

تفتیش کے دوران سکیورٹی فورس ملزم کے گھر منتقل ہونے کے بعد ابتدائی جانچ میں بچے محمد کی موت کی تصدیق کی۔ جس کی عمر صرف ڈیڑھ ماہ تھی۔ اس کی بالکونی سے گرنے کے فوراً بعد اس کی موت واقع ہوئی تھی۔ دوسرا بچہ جس کی عمر دو سال ہے شدید زخمی ہے اور اسے اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

پولیس نے ملزمہ نیفین عبداللہ کو گرفتار کر لیا۔ اس کی عمربیس سال بتائی جاتی ہے۔ واقعے کے بارے میں رپورٹ جاری کی گئی اور استغاثہ کو مطلع کیا گیا، جس نے متوفی بچے کی لاش کو جمصہ کے مردہ خانے میں منتقل کرنے کا حکم دیا۔

جب ملزمہ استغاثہ کے روبرو پیش ہوئی تو اس نے اپنے دو بچوں کو گھر کی بالکونی سے پھینکنے کا اعتراف کیا۔ خاتون نے کہا کہ اس نے ایسا اس لیے کیا کیونکہ اس کے شوہر نے اسے چھوڑ کر دوسری عورت سے شادی کر لی تھی اور زندگی کے دباؤ کا سامنا کرنے کے لیے اسے تنہا چھوڑ دیا تھا۔ وہ شدید نفسیاتی حالت کا سامنا کررہی تھی۔

ملزمہ نے استغاثہ کے سامنے بیان دیا کہ اس نے یہ دباؤ برداشت کرنے اور دونوں بچوں کے لیے ضروری اخراجات فراہم کرنے میں شوہر کی ناکامی کے بعد کیا۔

پبلک پراسیکیوشن نے ملزمہ کی ذہنی حالت اور جرم کے ارتکاب کے لیے اس کی مجرمانہ ذمہ داری کا تعین کرنے کے لیے چار روز کے لیے پولی کی تف تحویل میں دے دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں