پیرس:اسرائیل اورٹوٹل کے درمیان لبنان میں گیس فیلڈ سے منافع کی تقسیم پربات چیت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پیرس میں اسرائیلی حکام نے ٹوٹل انرجیز کے ساتھ آف شورتوانائی کی تلاش کے منصوبے سے مستقبل میں حاصل ہونے والے منافع میں ممکنہ شراکت داری کے بارے میں بات چیت کی ہے۔فرانس کی ملکیتی توانائی کمپنی ٹوٹل اسرائیل اور لبنان کے درمیان سمندری علاقے میں واقع قانا فیلڈ سے گیس نکالے گی۔

قانا فیلڈ ایک طویل عرصے سے ان دونوں ہمسایہ ممالک کے درمیان متنازع ہے،ان کے مابین سمندری سرحد کی حد بندی کے لیے امریکاکی ثالثی میں طویل مذاکرات ہوئے ہیں اور ان میں قانا فیلڈ مرکزی موضوع رہی ہے۔

اسرائیل کے وزیراعظم یائرلاپیڈ نے اتوار کے روز کہا تھا کہ معاہدے کے ابتدائی مسودے کی دونوں ممالک نے منظوری دے دی ہے ، اس کے تحت اسرائیل کو قانا میں لبنانی لائسنس کے تحت مستقبل میں تجارتی تلاش سے جزوی رائلٹی ملے گی۔

ذرائع کاکہنا ہے کہ اسرائیل کی وزارتِ توانائی کے ڈائریکٹرجنرل لیورشیلات پیرس میں موجود تھے اور ان کا نام یا قومیت ظاہرنہ کرنے کی شرط پر ان کا کہنا تھا کہ وہ 'ٹوٹل' کے حکام سے بات چیت کررہے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ان ملاقاتوں کا مقصد ایک ایسا طریق کاروضع کرنا ہے جس کے تحت ٹوٹل کمپنی اسرائیل کو قانا سے نکلنے والی گیس کی کسی بھی مقدار کی رائلٹی کاایک حصہ ادا کرے گی۔

ٹوٹل انرجیز نے اس اطلاع پر تبصرے سے انکار کیا ہے جبکہ اسرائیل کی وزارت توانائی نے بھی فوری طورپرکوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں