شام میں امریکی فوجی اڈے پر پھر میزائل داغ دیا گیا ۔ جانی نقصان نہیں ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں اتوار کے روز ایک مرتبہ پھر نامعلوم میزائلوں نے امریکی اڈے کو نشانہ بنا ڈالا۔ امریکی فوج نے اعلان کیا کہ نامعلوم فریق کی جانب سے شمال مشرقی شام میں امریکی افواج اور مقامی شراکت داروں کی فورسز کے زیر استعمال اڈے پر میزائل داغا گیا ہے۔

امریکی فوج کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ 107 ملی میٹر قطر کے میزائل نے الحسکہ میں الرمیلان کے علاقے میں فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تاہم حملے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

اضافی میزائل

رائٹرز کے مطابق فوج کی سینٹرل کمانڈ، جو مشرق وسطیٰ میں امریکی افواج کی نگرانی کرتی ہے، نے کہا ہے کہ حملہ کی جگہ پر اضافی میزائل بھی ملے ہیں ۔ تاہم انہوں نے حملے کے ذمہ داروں کے متعلق آگاہ نہیں کیا۔

یاد رہے کہ شام کے اس شمال مشرقی علاقے میں حکومتی فورسز کے زیر کنٹرول ایک گاؤں پر دو روز قبل امریکی ہیلی کاپٹر نے فضائی حملہ کیا تھا جس میں ایک داعش عہدیدار مارا گیا تھا۔

اس کے چند گھنٹے بعد ایک اور فضائی حملہ کیا گیا جس میں دہشت گرد تنظیم کے مزید دو ارکان مارے گئے تھے۔

اوباما دور میں امریکی فورسز کو شام میں تعینات کیا گیا تھا جو سیریئن ڈیموکریٹک فورسز کے ساتھ ملکر شام میں داعش کو پسپا کرنے کی کارروائیوں میں شریک ہوتی ہے۔ اس وقت بھی 900 امریکی فوجی شام میں تعینات ہیں۔

امریکہ اکثر شام میں ایرانی حمایت یافتہ مسلح گروپوں پر اپنی فوج پر حملوں کا الزام عائد کرتا رہتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں