روس اور یوکرین

اقوام متحدہ نے یوکرینی علاقوں کے الحاق پر خفیہ ووٹنگ کی روسی درخواست مسترد کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے منگل کو وہ روسی درخواست مسترد کرنے کے حق میں ووٹ دیے دیا جس درخواست میں روس نے اس ہفتہ کے آخر میں 193 رکنی اسمبلی میں خفیہ رائے شماری کرانے کی درخواست کی تھی۔ اس رائے شماری میں ارکان جنرل اسمبلی نے چار یوکرینی علاقوں کے روس میں الحاق کی مذمت کرنے کے متعلق ووٹ دینا تھا۔

جنرل اسمبلی نے 107 اراکین کی منظوری کے ساتھ، "مبینہ طور پر غیر قانونی ریفرنڈم" اور "علاقوں کو الحاق کرنے کی غیر قانونی کوشش" کی مذمت کردی ۔ جنرل اسمبلی نے اس حوالے سے قرار داد پر خفیہ بیلٹ کے بجائے عوامی ووٹ منعقد کرانے کا فیصلہ کرلیا۔ سفارت کاروں کا کہنا ہے کہ قرارداد پر ووٹنگ ممکنہ طور پر بدھ کو ہوگی۔

پیر کے روز صرف 13 ممالک نے مسودہ قرارداد پر عوامی ووٹ کی مخالفت کی۔ 39 دیگر ممالک نے ووٹنگ کرانے سے انکار کیا اور باقی نے ووٹ نہیں دیا۔

روس نے کہا کہ مغربی دباؤ کی وجہ سے یہ ہوگا کہ علانیہ ووٹنگ کی وجہ سے ملکوں کیلئے کھل کر موقف دینے میں مشکل پیدا ہوجائے گی۔

مسودہ قرارداد جس پر اس ہفتے کے آخر میں ووٹنگ کی جائے گی، ممالک سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ روس کے اقدام کو تسلیم نہ کریں ۔ مسودہ قرارداد میں یوکرین کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کی توثیق کی گئی ہے۔

امریکی وزیر خارجہ انتھونی بلنکن نے پیر کو بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ یہ واضح کریں کہ روسی صدر پیوتن کے اقدامات "مکمل طور پر ناقابل قبول" تھا۔

اپنے بیان میں بلنکن نے کہا "اب وقت آ گیا ہے کہ یوکرین کی حمایت میں بات کی جائے، نہ کہ غیر جانبداری کی چھتری تلے بیٹھ کر خوشامد میں مصروف رہا جائے۔ اس وقت اقوام متحدہ چارٹر کے بنیادی اصول داؤ پر لگ گئے ہبں۔

جنرل اسمبلی نے 100 کے مقابلے 11 ووٹوں سے ریفرنڈم کو کالعدم قرار دینے کی قرارداد منظور کی۔ 58 ممالک اجلاس سے غیر حاضر رہے اور 24 ملکوں نے ووٹنگ میں حصہ نہ لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں