ولادی میر پوتین سے صدر امارات شیخ زاید بن النہیان کی ملاقات

روس یوکرین مذاکرات پر زور دیا ۔ پوتین سے یورپ کے سب سے بڑے جوہری پلانٹ پر آگاہی لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ محمد بن زاید النہیان کی روسی صدر ولادی میر پوتین کے ساتھ یوکرین روس جنگ کے معاملے پر انتہائی ہم ملاقات ہوئی ہے۔ ملاقات کے دوران روس اور یوکرین کے درمیان بات چیت کا امکان کھلا رکھنے کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔

پوتین نے امارات کے صدر کو یوپر کے سب سے بڑی جوہری پلانٹ واقع زپوریزہزیہا کے بارے میں صورت حال سے بڑی تفصیل سے آگاہ کیا ۔ دونوں سربراہان کی یہ ملاقات سینٹ پیٹرز برگ میں ہوئی ہے ۔

یہ جوہری پلانٹ یوکرین سے چھینے گئے جنوبی شہر زپوریزہزیہا میں قائم ہے اور حالیہ دنوں سے دونوں متحارب فریق ایک دوسرے پر ممکنہ جوہری خطرے کے اسباب پیدا کرنے کا الزام لگا رہے ہیں۔

روسی خبر رساں ادارے مے مطابق صدر ولادی میر پوٹن نے ان کوششوں سے بھی اماراتی معزز مہمان کو آگاہ کیا جو روس کی طرف سے اس پلانٹ کی حفاظت کے لیے کی جارہی ہں تاکہ کوئی صورت نہ پیدا ہو جائے۔

شیخ محمد بن زاید النہیان نے کہ ان کا ملک جوہری پلانت کے بارے میں صورت حال کی مانیٹرنگ جاری رکھے گا۔اس موقع پر پوتین نے متحدہ امارات کی ان کوششوں کی تعریف کی جو روس اور یوکرین کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کے سلسلے میں کی گئی ہیں۔

دوسری جانب شیخ محمد بن زاید النہیان نے صدر پوٹن کو یوکرین کی جانب سے مختلف امور پر موقف سے آگاہ کیا ۔ اس دوران مختلف امور پر یوکرینی رائے سامنے آئی۔

امارات کے صدر نے روس اور یوکرین کے بات چیت کرنے پر زور دیا۔ جبکہ روسی صدر نے امارات کی ان مصالحانہ کوششوں کو جاری رکھنے کی اپنی خواہش کا زور دے کر ذکر کیا۔ صدر شیخ محمد بن زاید بن النہیان کا روس کا یہ دورہ پیر کے روز طے ہوا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں