امریکی حکام: سعودیہ سے تعلقات بہت اہم ، سٹریٹجک تعاون جاری رہے گا

سعودی عرب سے تعاون کو روکنا امریکہ کی قومی سلامتی کو نقصان پہنچاتا ہے: حکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی حکام نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ امریکہ کے تعلقات نازک نوعیت کے ہیں، عمومی رویہ تبدیل نہیں کیا جا سکتا اور امریکہ ریاض کے ساتھ تعاون جاری رکھے گا۔

امریکی اخبار "وال سٹریٹ جرنل" نے امریکی عہدیداروں کے حوالے سے لکھا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ تعلقات مشرق وسطیٰ میں امریکی مفادات کے لیے بہت اہم ہیں اور امریکا ریاض کے ساتھ سٹریٹجک تعاون جاری رکھنے کے لیے پرعزم ہے جو ایران کا مقابلہ کرنے کے لیے بھی بے حد ضروری ہے۔

امریکی عہدیداروں نے مزید کہا کہ سعودی عرب بالخصوص اس کی فوج کے ساتھ تعلقات کو خراب کرنا ایران کے ساتھ محاذ آرائی اور دیگر علاقائی مسائل کو حل کرنا مشکل بنا سکتا ہے۔ اسی بنا پر سعودیہ کے ساتھ تعلقات کا جاری رہنا بہت ضروری ہے۔

اٹلانٹک کونسل میں ’’سکوکروفٹ مڈل ایسٹ‘‘ کے ڈائریکٹر جوناتھن بانیکوف نے کہا کہ فوجی طور پر میں سوچ بھی نہیں سکتا کہ امریکہ سعودی افواج کے ساتھ تعاون بند کر دے گا۔ سعودی فوج کے ساتھ مشقوں کو روکنا بھی کسی طرح ہمارے مفاد میں نہیں ہے۔

پانیکوف نے مزید کہا کہ امریکہ اور سعودیہ میں انٹیلی جنس شیئرنگ بھی جاری رہنے کی توقع ہے کیونکہ یہ تعاون روکنے سے امریکہ کی قومی سلامتی کو نقصان پہنچے گا۔

اخبار کے مطابق امریکی کانگریس کے بعض عہدیداروں نے اتحادیوں کے ساتھ تعلقات کشیدہ کرنے کے بجائے تیل اور گیس کی ملکی پیداوار کو بہتر بنانے کا مشورہ دیا ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ سعودی امریکہ تعاون کو کسی بھی طرح متاثر نہیں دیکھنا چاہتے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں