روس نے مراکش کے ساتھ جوہری ری ایکٹر بنانے کے معاہدے کی توثیق کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روسی صدر ولادی میر پوتین نے جمعرات کو مراکش کے شاہ محمد ششم کے ساتھ پرامن مقاصد کے لیے جوہری توانائی کے استعمال کی ترقی کے حوالے سے ایک تعاون کے معاہدے کی توثیق کی۔

روسی خبر رساں ایجنسی ’آر آئی اے نووستی‘ نے بتایا کہ تعاون کے شعبوں میں مراکش میں توانائی کے بنیادی ڈھانچے کی ترقی، جوہری توانائی کے ری ایکٹرز کی تعمیر اور ڈیزائن کے ذریعے پانی کو صاف کرنے کے پلانٹس کا قیام، یورینیم کے ذخائر کی تلاش، سائنسی تحقیق کی ترقی، طبی اور صنعتی شعبوں میں جوہری توانائی کے استعمال کے لیے تحقیقی مراکز کا قیام شامل ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس معاہدے میں پاور اور ریسرچ ری ایکٹرز کو جوہری ایندھن کی فراہمی اور تابکار فضلے کو ٹھکانے لگانا، جوہری ایٹم کے شعبے میں بنیادی اور عملی تحقیق کے ساتھ ساتھ پرامن شعبوں میں تابکاری کی تکنیک کا استعمال بھی شامل ہے۔

خبر رساں ایجنسی نے کہا کہ معاہدے کی شرائط میں کہا گیا ہے کہ روس مراکش کو ملک میں معدنی وسائل کی بنیاد کا مطالعہ کرنے، جوہری پاور پلانٹس میں کارکنوں کو تربیت دینے اور مراکش کے مرکز برائے جوہری توانائی، سائنس اور ٹیکنالوجی کے کارکنوں کی مدد کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں