مسلسل 22 منٹ تک حرکت قلب بند رہنے کے باوجود لڑکی معجزانہ طورپر زندہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرمیں ایک لڑکی کے حرکت قلب کے بائیس منٹ تک بند رہنے کے بعد اس کے زندہ ہونے پر لوگ حیران ہیں۔ مصری ٹرائیتھلون چیمپئن جومانہ یاسر حرکت قلب بند رہنے کے بعد مسلسل بائیس منٹ تک بے ہوش رہی مگر اس کے بعد اسے پھر ہوش آگیا۔

جومانہ کو ابتدائی طبی امداد دی گئی اور پھر اسے شمالی مصر کے اسکندریہ گورنریٹ کے ایک اسپتال میں منتقل کیا گیا جہاں ضروری ٹیسٹ اور ضروری جانچ کے بعد اسے علاج کے لیے منتقل کیا گیا، اس کے بعد اس کے دل کی شریانیں 22 منٹ کے رکنے کے بعد دوبارہ پمپنگ کرنے لگیں۔

وہ دوبارہ ہوش میں آنے لگی

مقامی میڈیا کے مطابق جومنا یاسر کے ٹرائیتھلون کوچ محمد الجوہری نے کہا کہ اس نے بالآخر ہوش میں آنا، آنکھیں کھولنا، مسکرانا اور زائرین سے مصافحہ کرنا شروع کر دیا۔ مقامی میڈیا کے مطابق وہ 20 دن انتہائی نگہداشت میں رہی۔

انہوں نے مزید کہا کہ الحمد للہ ہم سب کی نفسیات جومنا کی بہتری سے بہتر ہونا شروع ہو گئے ہیں۔ یہ ہمارے رب کی طرف سے ہم پر ایک احسان ہے، اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ ہیروئین کا واپس آنا ابھی وقت کی بات ہے۔ اس کی معمول کی زندگی دوبارہ بحال ہونے میں وقت لگےگا مگر اب وہ تیزی سے روبہ صحت ہو رہی ہے۔

جومانا ياسر
جومانا ياسر

بحالی کی 25 کوششیں

جس اسپتال میں نوجوان ہیروئین جومانا یاسر کا علاج کیا گیا تھا اس نے پہلے اس کی موت کا اعلان کیا تھا۔ اسپتال نے اس کے دل کو حرکت میں لانے کے لیے پچیس بار کوشش کی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ نوجوان کھلاڑی 20 دن قبل ورزش کے دوران اچانک گر گئی تھی اور اس کے دل کے پٹھے بند ہونے اور بے ہوش ہونے کے بعد اسے اسپتال داخل کر دیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں