بیلا روس کے یوکرین جنگ میں روس کا ساتھ دینے کا خدشہ ہے: نیٹو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (نیٹو) نے جمعے کے روز روس کی طرف سے یوکرینی جنگ میں بیلاروس کے ملوث ہونے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔

نیٹو کے سیکرٹری جنرل جینز سٹولٹن برگ نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ کے ذریعے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ انہوں نے لیتھوانیا کے صدر گیتاناس نوسیدا کے ساتھ اگلے سال ولنیئس میں ہونے والے نیٹو سربراہ اجلاس کی تیاریوں پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں نے یوکرین کے لیے نیٹو کی حمایت کی اہمیت پر تبادلہ خیال کیا، اس تنازع میں بیلاروس کے ملوث ہونے کے بارے میں اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے۔

نیٹو کے سیکرٹری جنرل نے بیلاروسی صدر الیگزینڈر لوکاشینکو پر زور دیا کہ وہ کیف کے تنازعے میں مداخلت نہ کریں۔

اسٹولٹن برگ نے بدھ کے روز کہا تھا کہ وہ "لوکاشینکو کی حکومت سے توقع کرتے ہیں کہ وہ روسی یوکرینی تنازعہ میں ملوث نہیں ہوں گے۔ ان کا کہناتھا کہ نیٹو نے دیکھا ہے کہ بیلاروس کو یوکرین کے خلاف فضائی حملوں میں استعمال کیا گیا تھا۔

نیٹو کے سیکرٹری جنرل نے مزید کہا کہ "ہم نے دیکھا ہے کہ بیلاروس کو یوکرین کے خلاف میزائلوں اور فضائی حملوں کے لیے لانچنگ ایریا کے طور پر کیسے استعمال کیا جاتا ہے، لوکاشینکو کو روسی کوششوں کی مدد اور حمایت کرنا بند کر دینا چاہیے۔

واضح دھمکیاں

قبل ازیں بیلاروسی صدر الیگزینڈر لوکاشینکو نے کہا تھا کہ ان کے ملک نے روس کے ساتھ ایک مشترکہ فوجی ٹاسک فورس کی تعیناتی پر اتفاق کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ اقدام ملک کی مغربی سرحدوں پر کشیدگی کے بعد کیا گیا ہے۔

روسی فوجی دستے بیلاروس کی ٹرین استعمال کرتے ہوئے۔ [اے پی]
روسی فوجی دستے بیلاروس کی ٹرین استعمال کرتے ہوئے۔ [اے پی]

روس کے صدر ولادیمیر پوتین کے اتحادی لوکاشینکو نے دعویٰ کیا کہ یوکرین بیلاروس پر میزائل داغنے کی تیاری کر رہا ہے۔ انہوں نے روس کی جنگی کوششوں کے لیے منسک کی حمایت کا عزم ظاہر کیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ روس نے بیلاروس کو یوکرین میں اپنے فوجی آپریشن کے نقطہ آغاز کے طور پر استعمال کیا تھا، کیونکہ اس نے بیلاروس کے اڈوں سے شمالی یوکرین کی طرف فوجی اور ساز و سامان بھیجا تھا۔

بیلاروس میں موجود روسی ٹینک۔ [اے پی فائل فوٹو]
بیلاروس میں موجود روسی ٹینک۔ [اے پی فائل فوٹو]

منسک ماسکو کا سٹریٹجک اتحادی ہے جس نے بیلاروس کی یوکرین کی سرحد پر تقریباً 20,000 فوجی تعینات کر رکھے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں