سعودی عرب کا ثقافتی ورثہ مصر کی آرٹ نمائش میں توجہ کا مرکز بن گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں منعقدہ آرٹ اور ثقافت کی ایک بین الاقوامی نمائش میں سعودی عرب نے خصوصی طور پر شرکت کی ہے۔ یہ نمائش اپنی نوعیت کی چوتھی نمائش ہے جس میں عرب ممالک اور دوسرے ملکوں سے دست کاری اور ثقافتی ورثے کی نمائندگی کرنے والے آرٹ کے نمونے پیش کیے گئے ہیں۔

’ہمارا ورثہ‘ کے عنوان سے منعقد کردہ نمائش میں سعودی پویلین میں ہیریٹیج اتھارٹی کی سرگرمیاں پیش کی گئیں۔ زائرین کی بڑی تعداد نمائش کے سعودی پویلین کو وزٹ کر رہی ہے۔ زائرین نے عقال، بشوت اورالمشالح جیسے لوک ملبوسات کو بے حد پسند کیا۔

ثقافتی شناخت

نمائش کو وزٹ کرنے والے مہمانوں نے "ہمارا ورثہ" نمائش میں موجود ہیریٹیج اتھارٹی کی کاوشوں کو سراہا۔ سعودی پویلین میں پیش کردہ دستکاریوں اور مصنوعات کو سراہا کیونکہ اس میں قومی ورثے ورثے کو اجاگر کرنے کی منفرد کوشش کی گئی ہے اور سعودی عرب کے ثقافتی تشخص کی عکاسی کرنے والی مصنوعات، دست کاریوں اور آرٹ کے نمونے پیش کیے گئے ہیں۔

نمائش میں پیش کردہ سعودی آرٹ مملکت میں ثقافتی ہنر کے تنوع کی عکاسی کرتا ہے۔ نمائش میں پیش کردہ مصنوعات میں غیر معمولی ورثے، پینٹنگز اور انٹرایکٹو ڈیزائن شامل ہیں جن میں "القط العسیری" آرٹ پویلین میں اپنے قدرتی رنگوں کے ساتھ نمایاں طور پر توجہ کا مرکز رہی۔

ورثے کی مصنوعات

سعودی عرب کی ہیریٹیج اتھارٹی اس لحاظ سے منفرد رہی کہ اس نے ثقافتی اور سماجی علامت کے ساتھ روایتی دستکاری اور مستند ورثے کا قیمتی خزانہ پیش کیا جو سعودی عرب کے تاریخی ثقافتی ورثے کی عکاسی کرتا ہے۔ ان مصنوعات میں سب سے اہم عجل [عقال] بنانے کا ہنر اور بشوت بننے کا ہنر صاف دیکھا جا سکتا ہے۔ اس کی خصوصیت مینوفیکچرنگ کے معیار، درستگی اور مہارت، کوالٹی اور جمالیاتی لمس ہے نے زائرین کو اپنی جانب متوجہ کیے رکھا۔

وزارت ثقافت کی نمائندگی کرتے ہوئے "ہمارا ورثہ" نمائش میں سعودی ہیریٹیج اتھارٹی کی شرکت نے زائرین کو متعدد روایتی دستکاری مصنوعات کی تیاری میں حصہ لے کر ایک منفرد تجربہ فراہم کیا جو ثقافتی میدان میں سعودی عرب کی عظیم دولت کو اجاگر کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں