ایران مظاہرے

آسٹریا کا شہری ایران میں گرفتار؛وزارتِ خارجہ کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران میں حکام نے آسٹریا سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کوگرفتار کرلیا ہے مگر ان کا کہنا ہے کہ اس شخص کا ایران کو ہلا کر رکھ دینے والے مظاہروں کی لہر سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

آسٹریا کی وزارت خارجہ نے جمعرات کو اپنے اس شہری کی ایرانی حکام کے حوالے سے گرفتاری کی تصدیق کی ہےاور تہران پر زور دیا ہے کہ وہ اس کی گرفتاری کے حالات واضح کرے۔

بیان کے مطابق ایرانی حکام نے گرفتار شخص پر ایک ایسے جرم کا الزام عاید کیا ہے جس کا مہسا امینی کی موت کے بعد سے ملک میں جاری مظاہروں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

وزارت نے مزید کہا کہ وہ اس شخص کی معاونت کے لیے قونصلر حقوق کا "مکمل استعمال" کرے گی۔

ایران کو اس وقت گذشتہ برسوں میں بڑے پیمانے پر ہونے والے مظاہروں کے شرکاؤ کے خلاف کریک ڈاؤن پرمغربی ممالک کے دباؤ کا سامنا ہے۔ایران میں یہ احتجاجی تحریک بدنام زمانہ ’’اخلاقیات پولیس‘‘ کے زیر حراست 22 سالہ مہسا امینی کی موت کے بعد شروع ہوئی تھی۔

ایران نے بارہا بیرونی قوتوں پر مظاہروں کو ہوا دینے کا الزام عاید کیا ہے اور ستمبر کے آخر میں اعلان کیا تھا کہ فرانس، جرمنی، اٹلی، پولینڈ اور نیدرلینڈز سمیت نو غیرملکی شہریوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں