روس کو مہلک ڈرونزمہیّا کرنے پرایران پربرطانیہ کی پابندیاں عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ نے یوکرین میں شہری تنصیبات اور بنیادی ڈھانچے کو نشانہ بنانے کے لیے روس کو ڈرون مہیا کرنے پرایران کی تین فوجی شخصیات اور ایک دفاعی اسلحہ ساز ادارے پرپابندیاں عاید کردی ہیں۔

برطانیہ کے دفترخارجہ نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ایران کے تین اعلیٰ فوجی افسروں محمد حسین باقری، سیّد حجۃ اللہ قریشی اور سعید آغاجانی کے اثاثے منجمد کیے جارہے ہیں اور ان پرسفری پابندی عاید ہوگی۔

بیان میں بتایا گیا ہے کہ یہ تینوں شخصیات یوکرین میں حملوں میں استعمال ہونے والے ڈرونز روس کو مہیّا کرنے کی’ذاتی طور پرذمہ دار‘ہیں۔دفترخارجہ کا مزید کہنا ہے کہ برطانیہ شاہد ڈرونزبنانے والی ایرانی کمپنی شاہد ایوی ایشن انڈسٹریز کے اثاثے بھی منجمد کرلے گا۔

برطانوی وزیرخارجہ جیمزکلیورلی نے کہا ہے کہ یوکرین کے خلاف صدرولادی میرپوتین کی وحشیانہ اورغیرقانونی جنگ کی ایران کی طرف سے حمایت قابل مذمت ہے۔ یہ عالمی سلامتی میں ایران کے عدم استحکام پیدا کرنے والے کردار کا واضح ثبوت ہے۔

روس نے گذشتہ سوموار کویوکرین کے دارالحکومت کیف پر درجنوں تباہ کن ڈرون داغے تھے۔ان سے توانائی کے بنیادی ڈھانچے کو نشانہ بنایا گیا تھا اوران حملوں میں پانچ افرادہلاک ہوگئے تھے۔یوکرین کا کہنا ہے کہ یہ ایرانی ساختہ شاہد۔136 لڑاکا ڈرون تھے۔

ایران نے روس کو ڈرون مہیّاکرنے کی تردید کی ہے۔کریملن نے منگل کے روز اس بات کی تردید کی تھی کہ اس کی افواج نے یوکرین پر حملہ کرنے کے لیے ایرانی ڈرونز کا استعمال کیا تھا۔ واشنگٹن کا کہنا ہے کہ ایران کی جانب سے انکار ایک سفید جھوٹ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں