ایرانی اہلکار کریمیا میں ہیں اور یوکرین کے خلاف جنگ کابراہ راست حصہ بن رہے ہیں:امریکہ

ایران روس اسلحہ تجارت کے سبب لگائی گئی پابندیاں سختی سے نافذ کریں گے: جان کربی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ایرانی اہلکار کریمیا میں موجود ہیں اور یوکرین کے خلاف حملوں کے لیے ایرانی ساختہ ڈرونز کے حوالے سے روسی افواج کی مدد کر رہے ہیں۔ یہ بات وائٹ ہاوس کے سلامتی امور سے متعلق ترجمان جان کربی نے جمعرات کے روز کہی ہے۔

جان کربی نے کا رپورٹرز سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا' ہم اندازہ کرتے ہیں کہ ایرانی فوج کے اہلکار کریمیا میں زمین پر موجود تھے ۔ انہوں نے وہاں موجود ہوتے ہوئے روسری جنگی آپریشنز میں روسی فوج کی مدد کی۔'

وائٹ ہاوس کے ترجمان جان کربی نے مزید کہا ' کریمیا میں ایرانی اہلکار ڈرونز کی تربیت کاروں کی صورت میں اور تکنیکی مدد گاروں کے طور پر موجود تھے۔ اسی وجہ سے روسی ایرانی ساختہ ڈرون طیاروں کو چلا کریوکرین میں انفراسٹرکچر کو بہت نقصانے میں کامیاب ہوا ۔'

امریکی ترجمان کے بقول اب تہران یوکرین کے خلاف جنگ میں براہ راست زمین پر موجود ہے اور روس کی مدد کر رہا ہے، ایرانی ہتھیاروں کی فراہمی کے بعد سے وہ یوکرین کے شہریوں ، اور شہری ڈھانچے کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔'

ترجمان اس سلسلے میں کہا ' امریکہ ان چیزوں کو ہر طریقے سے بے نقاب کرے گا اور ایران کو یوکرین کے خلاف گولہ بارود اسلحہ فراہم کرنے سے روکے گا،'

انہوں نے یہ بھی کہا ' امریکہ کی طرف سے ایران اور روس کے درمیان اسلحے کی تجارت کی وجہ سے لگائی گئی اقتصادی پابندیوں کو پوری شدت کے ساتھ نافذ کیا جائے گا ۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں