دبئی ڈسٹرکٹ کولنگ فرم ’امپاور‘10فی صد حصص ابتدائی فروخت کے لیے پیش کرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

دبئی نے الامارات سینٹرل کولنگ سسٹمزکارپوریشن میں دس فی صد حصص فروخت کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔اسٹاک ایکسچینج میں تجارتی حجم کو بڑھانے کی مہم کے حصے کے طور پر اس سال میں شہر کے کسی ادارے کی یہ چوتھی نج کاری ہے۔

گلف نیوز میں شائع شدہ ایک اشتہار کے مطابق دبئی الیکٹریسٹی اینڈ واٹراتھارٹی اور الامارات پاور انویسٹمنٹ ابتدائی عوامی پیش کش میں ایک ارب مالیت کے حصص پیش کریں گی۔

ڈسٹرکٹ کولنگ فرم ، جسے امپاور کے نام سے جانا جاتا ہے،31 اکتوبر سے ابتدائی حصص (آئی پی او) کے لیے سرمایہ کاروں کے آرڈر لینا شروع کردے گی۔حصص کی قیمت 9 نومبر کو مقرر جائے گی۔

امپاورکے ابتدائی حصص کی فروخت دبئی حکومت کی نج کاری مہم کا حصہ ہے جس کا مقصد لیکویڈیٹی میں اضافہ کرنا اور ہمسایہ امارت ابوظبی اور سعودی عرب میں حصص کی فروخت میں تیزی کی تقلید ہے۔ اس سال دبئی کی تین کمپنیوں بشمول دبئی الیکٹریسٹی نے مجموعی طور پرحصص کی فروخت سے قریباً 6 ارب ڈالر جمع کیے ہیں۔

تیل کی بلند قیمتوں اورسرمایہ کاروں کی آمد نے توانائی سے مالامال خلیج میں اسٹاک مارکیٹوں کے ذریعے آئی پی او میں تیزی پیدا کردی ہے،ان کی نمایاں فرموں کی ایک ایسے وقت میں زبردست مانگ ہو رہی ہے جب دیگرمارکیٹوں میں نئی کمپنیوں کے اندراج اور ابتدائی حصص کی فروخت کا عمل کم وبیش رُک چکا ہے۔

دبئی کا بینچ مارک انڈیکس قریباً پانچ فی صد نیچے ہے کیونکہ حکومت نے اپریل میں دبئی الیکٹریسٹی کی 6.1 ارب ڈالر کی لسٹنگ کے ساتھ اس کے آئی پی او کی پیش کش کا آغاز کیا تھا۔اس یوٹیلٹی کے حصص گذشتہ ہفتے پہلی بار ان کی پیش کش کی قیمت سے نیچے گر گئے تھے۔

امپاورقریباً دو دہائی پہلے قائم کی گئی تھی۔اس کی 70 فی صد ملکیت دبئی بجلی کے پاس ہے۔کمپنی کوتوقع ہے کہ آئی پی او کے بعد دو سال تک کم سے کم سالانہ منافع 85 کروڑ درہم (23کروڑ10 لاکھ ڈالر) رہے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں