بائیڈن کا بھلکڑ پن جاری، ’’ وائٹ ہاؤس کا راستہ کہاں ہے‘‘ باغ میں گم ہوکر گارڈز سے

امریکی صدر پٹسبرگ میں تقریر کے بعد پوڈیم سے باہر جانے کا راستہ ہی بھول گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی صدر بائیڈن کی غائب دماغیاں جاری ہیں۔ ایک ویڈیو کلپ میں ان کی نئی غلطی سامنے آگئی۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جو بائیڈن وائٹ ہاؤس کے لان میں درخت لگانے کی مہم میں حصہ لینے کے بعد اپنا راستہ بھول گئے ہیں۔

اخبار ’’دی ڈیلی میل‘‘ کے مطابق، بائیڈن کنفیوزہو کر ایک سمت بڑھنے لگے، پھر اچانک رک گئے اور گارڈز سے پوچھنے لگے کہ کون سا راستہ اختیار کرنا ہے۔ جب ان کے گارڈز نے صحیح سمت کی طرف اشارہ کیا تو بائیڈن نے کہا کہ میں دوسری سمت جانا چا رہا تھا ، گارڈز نے جواب میں تصدیق کی کہ وہ واقعی غلط سمت پر تھے۔ آخر کار بائیڈن گارڈز کے بتائے راستے پر وائٹ ہاؤس کی طرف روانہ ہوگئے۔

ایک اور موقع پر، بائیڈن پِٹسبرگ، پنسلوانیا میں ایک تقریر کے بعد الجھن میں نظر آئے جہاں وہ پوڈیم سے اپنا راستہ تلاش کرنے سے قاصر ہوکر رہ گئے۔

"فاکس نیوز" کے مطابق بائیڈن نے تقریباً ایک ہفتہ قبل پٹسبرگ میں پورے ملک میں تعمیر نو اور انفراسٹرکچر کی تعمیر کے متعلق تقریر کی تھی ۔ امریکی صدر نے اس جگہ سے ووٹروں سے خطاب کیا تھا جہاں لگ بھگ نو ماہ قبل ایک پل گرنے سے 10 افراد زخمی ہو چکے تھے

تقریر کے اختتام پر بائیڈن سٹیج سے ہٹ کر سیڑھیوں سے دوسری طرف موڑ کاٹ گئے اور چند لمحوں تک الجھ کر ادھر ادھر دیکھتے رہے۔ پھر سر ہلایا اور اونچی آواز میں کچھ کہا۔ پھر واپس مڑے اور جلدی سے باہر نکل گئے۔

یاد رہے بائیڈن اس سال 80 برس کے ہو جائیں گے۔ وہ تاریخ کے سب سے معمر امریکی صدر ہیں۔ ان کے مخالفین ان کی زبان کی بار بار کی لغزش اور عمل کی غلطیوں کا حوالہ دیتے ہوئے ان پر مسلسل ذہنی زوال کا الزام لگاتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں