کیئف کو گولہ بارود نہیں بلکہ وارننگ سسٹم دینے کو تیار ہیں: گانٹز کا پھر بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر دفاع بینی گانٹز نے ایک مرتبہ پھر اپنے موقف کا اعادہ کیا ہے کہ اسرائیل یوکرین کو ہتھیار نہیں دے گا تاہم کئیف کو حملوں سے خبردار کرنے والے ابتدائی انتباہی نظام فراہم کیا جا سکتا ہے۔

اس امر کا اظہار اسرائیلی وزیر دفاع نے گذشتہ روز اپنے یوکرینی ہم منصب دیمترو کولیبا کے ساتھ ٹیلی فون پر گفتگو میں کیا۔ اس دوران انہوں نے تل ابیب کی جانب سے کئیف کو ہتھیار فراہم کرنے سے ایک مرتبہ پھر انکار کر دیا۔

واضح رہے اسرائیل کا الارمنگ سسٹم میزائلوں کی فائرنگ، میزائلوں اور ڈرونز کا پتہ لگانے، ان کے سائز اور خطرے کی درجہ بندی کرنے اور نقشے پر خطرناک علاقوں کی نشاندہی کرنے کے لیے ریڈار اور فوٹو الیکٹرک آلات کے امتزاج کا استعمال کرتا ہے۔

آئرن ڈوما

گزشتہ ہفتے بھی اسرائیلی وزیر دفاع بینی گانٹز نے کہا تھا کہ اسرائیل یوکرین کو ہتھیار نہیں بھیجے گا، لیکن ساتھ ہی انہوں نے کئیف کو قبل از وقت وارننگ سسٹم فراہم کرنے کے امکان پر بھی زور دیا تھا۔

کئیف کے اعلان کے بعد کہ وہ آئرن ڈوم جیسے اسرائیلی فضائی دفاعی نظام کے لیے باضابطہ درخواست جمع کرائے گا گانٹس نے گزشتہ بدھ کو یورپی یونین کے سفیروں کے ساتھ ایک انٹرویو میں اس طرح کے اقدام کو مسترد کر دیا تھا۔

اسرائیلی ائرن ڈوم
اسرائیلی ائرن ڈوم

ان کے دفتر سے جاری ایک بیان کے مطابق انہوں نے کہا کہ "ان کا ملک یوکرین کی انسانی بنیادوں پر مدد کرنے اور اسے زندگی بچانے والے نظام اور دفاعی آلات فراہم کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔"

انہوں نے یہ بھی کہا اسرائیل مختلف آپریشنل تحفظات کی وجہ سے یوکرینی افواج کو ہتھیاروں کے نظام منتقل نہیں کرے گا تاہم وہ اپنی صلاحیتوں کے مطابق ان کی حمایت جاری رکھے گا۔

ماسکو کے ساتھ بحران

دی ٹائمز آف اسرائیل نے رپورٹ کیا کہ یوکرین کے سینئر حکام نے عوامی تقریروں اور تل ابیب میں فیصلہ سازوں کے ساتھ نجی گفتگو میں کہا کہ اسرائیل اپنے میزائل ڈیفنس سسٹم خاص طور پر آئرن ڈوم کو کئیف کو فراہم کرے۔ اسرائیل نے اب تک ماسکو کے ساتھ تعلقات میں کسی بحران سے بچنے کیلئے کئیف کو براہ راست فوجی مدد فراہم کرنے سے گریز کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں