روس اور یوکرین

یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیار تیار کئے جارہے: روس نے امریکہ سے باضابطہ شکایت کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روس کی جانب سے پہلی مرتبہ امریکہ پر یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیاروں کے پروگرام کی مالی معاونت کا الزام عائد کیے ہوئے 8 ماہ گزر چکے ہیں، لیکن اس کی تصدیق کے بعد کہ اسے فوجی کارروائی کے بعد یوکرین کی لیبارٹریوں میں شواہد ملے ہیں، روس نے الزام کی تجدید کرتے ہوئے امریکہ سے باضابطہ شکایت کردی ہے۔ روس نے باضابطہ طور پر اقوام متحدہ سے اس معاملہ کی تحقیقات کرانے کی درخواست کی ہے۔

روسی وزارت خارجہ نے جمعرات کے روز اعلان کیا ہے کہ روس نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیاروں کی تیاری میں واشنگٹن کے ملوث ہونے کے بارے میں یو این انویسٹی گیشن شروع کرے ۔

روسی وزارت ،خارجہ نے کہا روس کے پاس یوکرین کی سرزمین پر امریکہ کی حیاتیاتی فوجی سرگرمیوں کی بین الاقوامی تحقیقات کی درخواست کرنے کے لیے سلامتی کونسل کے صدر کو شکایت جمع کرانے کے سوا کوئی چارہ نہیں تھا۔ اس حوالے سے شکایت کا ایک مسودہ قرار داد پیش کردیا گیا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ تحقیق کا مقصد مہلک پیتھوجینز کے پوشیدہ پھیلاؤ کے لیے استعمال ہونے والے طریقہ کار کا پتہ لگانا ہے۔

یہ خالص جھوٹ ہے: امریکہ

دوسری طرف، اقوام متحدہ میں امریکی سفیر نے جمعرات کو سلامتی کونسل کے سامنے کہا کہ یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیاروں کی مبینہ تیاری میں واشنگٹن کے ملوث ہونے کے روس کے الزامات "خالص بہتان" ہیں۔

امریکی سفیر لنڈا تھامس گرین فیلڈ نے کہا "ہر کوئی جانتا ہے کہ یہ الزامات خالص جھوٹ ہیں اور بغیر کسی ثبوت کے لگائے گئے ہیں۔"

انہوں نے مزید کہا کہ ان کا ملک یہ واضح کرتا ہے کہ یوکرین کے پاس حیاتیاتی ہتھیاروں کا کوئی پروگرام موجود نہیں جس طرح امریکہ کے پاس بھی ایسا کوئی پروگرام موجود نہیں ہے۔

ہم نہیں جانتے: اقوام متحدہ

الزامات کا تبادلہ اس وقت ہوا جب اقوام متحدہ نے اس بات پر زور دیا کہ وہ یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیاروں کے پروگرام سے آگاہ نہیں ہے۔

اقوام متحدہ میں تخفیف اسلحہ کے امور کے انچارج ادیجو ایبو نے کہا کہ یوکرین میں حیاتیاتی ہتھیاروں کے پروگرام کے وجود کے بارے میں "معلوم نہیں" ہے۔ جس کی روس نے اقوام متحدہ سے تحقیقات کی درخواست کی تھی۔

ایبو نے سلامتی کونسل کو بتایا کہ اقوام متحدہ کے پاس اس الزام کی تحقیقات کا مینڈیٹ یا "تکنیکی صلاحیت" نہیں ۔

الزام پہلی مرتبہ نہیں لگا

یاد رہے یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ ماسکو نے امریکہ پر اس طرح کی کارروائیوں کا الزام لگایا ہے۔فروری کے اواخر میں شروع ہونے والے یوکرین میں فوجی آپریشن کے آغاز کے کچھ دیر بعد ہی روس نے امریکہ پر حیاتیاتی ہتھیاروں کے پروگرام کی مالی معاونت کا الزام لگا دیا تھا۔

اس نے پہلے 2018 میں بھی امریکہ پر یہ الزام لگایا گیا تھا کہ وہ جارجیا کی ایک تجربہ گاہ میں خفیہ طور پر حیاتیاتی تجربات کر رہا ہے۔ خیال رہے جارجیا بھی یوکرین کی طرح نیٹو اور یورپی یونین میں شامل ہونے کی کوشش کر رہا ہے۔

دوسری طرف امریکہ اور یوکرین نے بارہا ایسے لیبارٹریوں کے وجود سے انکار کیا ہے جن کا مقصد ملک میں حیاتیاتی ہتھیار تیار کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں