شمالی شام میں ترکیہ کے حملے نے ہماری افواج کو خطرے میں ڈال دیا: امریکہ

ترکیہ کے ڈرون نے واشنگٹن کی قیادت میں شامی ڈیموکریٹک فورسز اور عالمی اتحاد کے مشترکہ فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی فوج کی سینٹرل کمانڈ نے بدھ کو "ایجنسی فرانس پریس" کو ایک بیان میں بتایا ’’کہ شمالی شام میں ترکی کے حملے سے اس کی افواج کو خطرہ لاحق ہو گیا ہے۔‘‘ یاد رہے منگل کو امریکہ نے تردید کی تھی کہ ترکیہ کے حملے میں اس کے اڈے کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

منگل کے روز ترکیہ کے ڈرون نے الحسکہ گورنری میں واشنگٹن کی قیادت میں سیریئن ڈیموکریٹک فورسز اور بین الاقوامی اتحاد کے ایک مشترکہ فوجی اڈے کو نشانہ بنایا تھا۔ اس کے بعد سیریئن ڈیموکریٹک فورسز نے اعلان کیا کہ اس حملے میں اس کے دو ارکان مارے گئے ہیں۔

امریکی سینٹ کام نے منگل کو کہا تھا امریکی افواج خطرے سے باہر ہیں۔ اس کی افواج کے مقامات کو نشانہ نہیں بنایا گیا۔

تاہم بدھ کو سینٹ کام کے میڈیا آفس نے نیوز ایجنسی کو تصحیح بھیج دی جس میں کہا گیا کہ ہمیں اضافی معلومات موصول ہوئی ہیں جو اس بات کی نشاندہی کرتی ہیں کہ ترکیہ کی بمباری کے نتیجے میں امریکی افواج اور اہلکاروں کو خطرہ تھا۔ اگرچہ اس حملہ میں امریکی افواج کا جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں