حوثی باغی ایرانی پاسداران انقلاب کے تعاون سے بندرگاہوں پر حملوں کی تیاری میں مصروف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں مسلح افواج کے سرکاری ترجمان بریگیڈیئر جنرل عبده مجلی نے کہا ہے کہ حوثی ملیشیا نے حضر موت گورنری میں تیل کی بندرگاہوں اور بحری جہازوں کو بمباری کی دھمکیاں جاری کر رکھی ہیں۔

ایک پریس بریفنگ میں ملیشیا کے رہنماؤں نے ایرانی پاسداران انقلاب کے تعاون سے بین الاقوامی انسانی قوانین کی صریح خلاف ورزی کرتے ہوئے بندرگاہوں، تیل کی تنصیبات اور بحری جہازوں پر نئے حملے کرنے کی تیاریوں کا اعلان کیا ہے۔

انہوں نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ یمنی مسلح افواج کے فضائی دفاع نے حوثی ملیشیا کی طرف سے ایرانی پاسداران انقلاب کی حمایت سے حضر موت گورنری میں الضبہ آئل پورٹ پر شروع کیے گئے دہشت گردانہ حملوں کا جواب دیا ہے۔

تین ڈرون مار گرائے

انہوں نے کہا کہ فضائی دفاع دشمن کے تین ڈرون کو روکنے اور مار گرانے میں کامیاب رہا ۔ ایک ڈرون بندرگاہ میں تیل برآمد کرنے والے پلیٹ فارم سے جا ٹکرایا جس سے پلیٹ فارم کو مادی نقصان ہوا۔

پیر کے روز امریکی محکمہ خارجہ نے حوثی ملیشیا سے یمنی بندرگاہوں پر اپنے حملے فوری طور پر بند کرنے کا مطالبہ کیا تھا ۔ امریکہ نے کہا تھا کہ ان حملوں سے وسائل کے بہاؤ میں خلل پڑ رہا اور ملک کی مصائب میں اضافہ ہو رہا ہے۔

بندرگاہوں پر حملوں میں اضافہ

یاد رہے اکتوبر کے اوائل میں اقوام متحدہ کی جنگ بندی کے خاتمے کے بعد سے حوثی ملیشیا نے تیل کی بندرگاہوں پر اپنے حملوں میں اضافہ کر دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں