ورلڈ کپ میں جنسی سکینڈل نے سربیا کے ڈریسنگ روم کو ہلا کر رکھ دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قطر میں ورلڈ کپ 2022 میں شرکت کرنے والی سربیا کی قومی فٹ بال ٹیم کے کیمپ میں اس وقت بحران پیدا ہوگیا جب اطالوی جووینٹس کے سٹرائیکر ڈوسان ولاہووچ کے جنسی سیکنڈل سامنے آ گیا۔

سربیا برازیل سے دو کے مقابلے میں صرف سے ہارنے اور کیمرون کے ساتھ تین کے مقابل تین سے ڈرا کرنے کے بعد گروپ جی میں ایک پوائنٹ کے ساتھ آخری نمبر پر ہے۔

اگرچہ ولاہووچ سربیا کی قومی ٹیم کی فہرست میں نمایاں ناموں میں سے ایک ہیں لیکن وہ دو میچوں میں ایک اہم کھلاڑی کے طور پر حصہ نہیں لے سکے تھے۔ جس سے ان کی شرکت نہ کرنے کی وجوہات سے متعلق کئی سوالیہ نشانات کھڑے ہو گئے تھے۔ انہوں نے برازیل کے خلاف میچ میں 24 منٹ تک شرکت کی۔ اور کیمرون کے خلاف میچ میں کوچ نے انہیں استعمال نہیں کیا۔

اخبار "ویسرنجی" نے ویب سائٹ پر شائع ایک رپورٹ میں سربیا کی قومی ٹیم کی صفوں میں شدید عدم اطمینان کا انکشاف کیا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کوچ سٹوجکووچ ٹیم پر کنٹرول کھو چکے ہیں۔ رپورٹ میں کھلاڑیوں کی آپس کی لڑائی کا بھی انکشاف کیا گیا تاہم کھلاڑیوں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ڈریسنگ روم میں پھیلی افراتفری کے بارے میں نئی تفصیلات منظر عام پر آئی ہیں۔ قومی ٹیم کے اندر جنسی سکینڈل کی موجودگی کے بارے میں معلومات میں اضافہ ہو رہا ہے۔ اخبار کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ "22 سالہ" جووینٹس کے سٹرائیکر نے ساتھی گول کیپر راجکووچ کی اہلیہ کے ساتھ جنسی تعلق قائم کر لیا تھا۔

راجکووچ نے 2018 میں اینا کاکک سے شادی کی تھی اور کچھ کھلاڑیوں کے درمیان دیگر کھلاڑیوں کی گرل فرینڈز یا بیویوں کے ساتھ تعلقات کے بارے میں میڈیا رپورٹس سامنے آئی تھیں اور دوران تربیت اس بات پر جھگڑا بھی ہوا تھا تاہم کپتان نے اس کی تردید کردی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں