الزامات پر افسوس: جنسی سکینڈل کی زد میں آنیوالے سربین کھلاڑی کا بیان سامنے آ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنسی سکینڈل میں ملوث ہونے کے الزامات کے بعد سربیا کی فٹ بال ٹیم کا رد عمل سامنے آگیا۔

اپنی ٹیم کے سوئٹزر لینڈ کیخلاف میچ کے موقع پر سربیا کی ٹیم کے سٹرائیکر ڈوسن ولاہووچ نے پریس کانفرنس کا آغاز کرتے ہوئے کہا مجھے افسوس ہے۔ انہوں نے اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کی تردید کر دی۔ ان پر الزامات تھے کہ ان کے 2022 کے ورلڈ کپ میچ میں کم وقت کیلئے شرکت کی وجہ یہ تھی کہ اس دوران وہ اپنی ٹیم کے گول کیپر راجکووچ کی بیوی کے ساتھ قابل اعتراض سرگرمیوں میں ملوث تھے۔

اپنے ملک کے میچوں میں سربیا کے سٹرائیکر کی عدم موجودگی نے شکوک و شبہات کو جنم دیا تھا اور سربیا کے میڈیا نے رپورٹ کیا کہ ورلڈ کپ میں ان پر بھروسہ نہ کرنے کی وجہ ان کے اپنے ساتھی راجکووچ کی اہلیہ کے ساتھ اچھے تعلقات کی استواری تھی۔ تاہم سٹرائیکر ڈوسن ولاہووچ نے ان الزامات کی تردید کر دی ہے۔

سوئٹزرلینڈ کے میچ سے قبل پریس کانفرنس کے دوران بات کرتے ہوئے ولا ہووچ نے کہا مجھے افسوس ہے کہ مجھے ورلڈ کپ میں پریس کانفرنس کا آغاز اس طرح کرنا پڑا، لیکن مجھے اس پر بات کرنا پڑ رہی ہے کیونکہ میرا نام اچھالا جا رہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اتنی احمقانہ بات پر تبصرہ کرنے کی ضرورت نہیں ہے، یہ بات واضح ہے کہ یہ لوگ بور ہو رہے ہیں اور ان کے پاس اس سے بہتر کرنے کے لیے کچھ نہیں ہے۔ لیکن یہ واضح ہے کہ موجودہ

وقت میں ان کا یہ کام ٹیم کے قومی مفاد کے خلاف ہے۔

22 سالہ ولاہووچ نے کہا کہ ہم پہلے سے کہیں زیادہ متحد ہیں اور ٹیم کا ماحول پہلے سے بھی بہتر ہوگیا ہے۔ یہ کہانیاں مضحکہ خیز ہیں۔ میں صرف اپنے نام اور سالمیت کی حفاظت کرنا چاہتا ہوں، اس لیے میں اس کا مقابلہ کروں گا ، اگر ضروری ہوا تو قانونی کارروائی بھی کروں گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں