اخوان نے ظاہری جلد بدلی، دہشتگردانہ نظریات برقرار ہیں: سعودی وزیر

ڈاکٹر عبداللطیف آل الشیخ: "کردار کا قتل" ان نفسیاتی جنگوں میں سے جو لوگوں یا حکومتوں کی ساکھ کو نشانہ بناتی ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں اسلامی امور، دعوت و رہنمائی کے وزیر ڈاکٹر عبداللطیف بن عبدالعزیز آل الشیخ نے الاخوان المسلمون کے خطرے سے خبردار کیا اور بتایا ہے کہ الاخوان اپنے تمام دھڑوں اور تمام پہلوؤں کے اعتبار سے دیوالیہ پن کا شکار ہو چکی ہے۔

ڈاکٹر عبد اللطیف نے ٹویٹر کے اپنے آفیشل اکاؤنٹ پر لکھا کہ الاخوان المسلمون کے افراد اپنی بیرونی جلد کے رنگ کو بدلتے اور اس میں تغیر لے آتے ہیں جبکہ ان کا بدنیتی پر مبنی دہشت گردانہ خارجی نظریہ باقی رہتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح رنگ بدلنا ایک طریقہ کار ہے جس کی وہ پیروی کرتے ہیں اور یہ وہی ہے جس کا ان کے قائدین نے اعلان کیا ہے کہ جو کوئی ایک مستحکم وطن، ایک محفوظ شہری اور ابھرتی ہوئی معیشت چاہتا ہے اسے چاہیے کہ وہ ان کے سامنے کھڑا ہوجائے اور انہیں محفوظ نہ بنائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "کردار کا قتل" ان "نفسیاتی جنگوں میں سے ایک ہے جو لوگوں حتیٰ کہ حکومتوں کی ساکھ کو نشانہ بناتی ہے۔ یہ الاخوان المسلمون کی طرف سے استعمال ہونے والی سب سے نمایاں جنگ ہے جہاں وہ اپنے مخالفین کو سیاسی، اخلاقی، سماجی یا معاشی طور پر نقصان پہنچانے کی کوشش کرتی ہے افواہیں پھیلا کر، جھوٹے الزامات لگا کر اور حقائق کو توڑ مروڑ کر۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں