پناہ گزین پیراشوٹ کےذریعہ مراکش سے سپین میں داخل ہوگیا

تارک وطن بلند باڑ کے اوپر سے اڑ کر میلیلا کے انکلیو میں اترا، شناخت اور قومیت کو ظاہر نہیں کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہسپانوی حکام نے جمعہ کے روز بتایا ہے کہ ایک تارک وطن پیراشوٹ کی مدد سے اڑ کر مراکش سے ملک میں داخل ہوگیا ہے۔ یورپ داخل ہونے کیلئے حیران کن انداز اختیار کرنے والی اس شخصیت نے جمعرات کو شمالی مراکش کی اونچی باڑ سے چھلانگ لگائی اور ہسپانوی انکلیو میلیلا تک پہنچنے میں کامیاب ہوگیا۔

میلیلا کی میونسپلٹی کے ترجمان نے "ایجنسی فرانس پریس" کو بتایا کہ کار میں سوار 2 افراد نے شہر میں داخل ہونے سے پہلے ایک شخص کو پیراشوٹ کے ذریعے اڑتے ہوئے دیکھا تھا۔ دونوں نے اس تارک وطن کے ٹھکانے کا تعین کیے بغیر واقعہ کےمتعلق ہسپانوی سول گارڈ کو آگاہ کردیا۔ ترجمان نے انوکھے انداز میں سرحد پار کرنے والی کی شناخت اور قومیت کے متعلق آگاہ نہیں کیا۔

ترجمان کے مطابق یہ پہلا موقع ہے جب کوئی غیر قانونی تارکین وطن پیراشوٹ کے ذریعے میلیلا میں داخل ہوا ہے۔

شمالی مراکش کے ساتھ واقع میلیلا اور سیوٹا کے ہسپانوی انکلیو کے چاروں طرف خاردار تاروں، نگرانی کے کیمروں اور سرحدی محافظوں کی چوکیوں والی ایک اونچی لوہے کی باڑ لگائی گئی ہے جو غیرقانونی تارکین کی دراندازی کو روکتی ہے۔

ان حفاظتی انتظامات کے باوجود ان دونوں انکلیوز نے حالیہ برسوں میں تارکین وطن کی سپین داخل ہونے کی متعدد کوششوں کا مشاہدہ کیا ہے۔ زیادہ تر تارکین وطن سب صحارا افریقی ملکوں سے سپین داخل ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔

خیال رہے امسال 24 جون کو اسی طرح کی ایک بڑی کوشش کے دوران بڑا سانحہ پیش آگیا تھا جس میں 23 تارکین وطن ہلاک ہوگئے تھے۔ اس واقعے سے مراکش، سپین اور بیرون ملک وسیع پیمانے پر ہمدردی پیدا ہوئی تو ساتھ ساتھ ناراضی کا بھی اظہار کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں