سعودی عرب میں پناہ گزین نے جعلی ہیلتھ پریکٹیشنر بن کر لیکچر دے ڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں پبلک پراسیکیوشن کے دفتر نے ایک ایسے غیر ملکی سے تفتیش شروع کر دی جس نے ایک ہیلتھ پریکٹیشنر کی نقالی کرتے ہوئے ایک ہوٹل میں لیکچر تک دے ڈالا۔

پبلک پراسیکیوشن کے ایک ذریعے نے بتایا کہ پبلک پراسیکیوشن آفس نے تارکین وطن پر ہیلتھ پروفیشنز پریکٹس قانون کی دفعات کی خلاف ورزی کا الزام عائد کیا ہے۔

تفتیش سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ملزم نے سوشل میڈیا کے ایک پروگرام میں اپنے اکاؤنٹ کے ذریعے غلط طبی معلومات شائع کیں۔ اس حوالے سے ایک ہوٹل میں لیکچر دیا اور اپنے دعوے کے مطابق طبی مشورے دئیے جبکہ اس کے پاس میڈیکل کے بیان کردہ شعبہ میں تعلیمی قابلیت ہی نہیں تھی۔ اس کے پاس مجاز حکام کی طرف سے باقاعدہ دستاویز بھی موجود نہیں تھیں جن کی بنا پر وہ صحت سے متعلق سرگرمیاں انجام دینے یا طبی مشورے دینے کا اہل بن سکتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں