چینی ہیکروں نے امریکاکے کووِڈ ریلیف فنڈ سے لاکھوں ڈالرچُرالیے:سیکرٹ سروس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

چینی ہیکروں نے 2020 سے اب تک امریکا کےکووِڈ ریلیف فنڈ سے لاکھوں ڈالراڑا لیے ہیں۔

امریکا کی خفیہ سروس نے چینی ہیکروں کی اس نقب زنی کی تصدیق کی ہے مگرمزیدتفصیل فراہم کرنے سے انکارکردیا ہے۔اس نے این بی سی نیوز کی ایک رپورٹ کی تصدیق کی جس میں کہا گیا ہے کہ چینی ہیکروں کی ٹیم مبیّنہ طور پرامریکی فنڈز کی چوری کی ذمہ دار ہے۔وہ سکیورٹی ریسرچ کمیونٹی میں اے پی ٹی 41 یا وِنٹی کے نام سے جانی جاتی ہے۔

ماہرین کے مطابق اے پی ٹی 41 ایک زبردست سائبرکریمنل گروپ ہے۔اس نے حکومت کی حمایت یافتہ سائبردراندازی کے علاوہ مالی فوائد کے لیے ڈیٹا کی خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا ہے۔

اس ہیکنگ گروپ کے متعددارکان پر2019 اور 2020 میں امریکی محکمہ انصاف نے 100 سے زیادہ کمپنیوں کی جاسوسی کرنے کے الزام میں فردِجُرم عائد کی تھی۔ان میں سافٹ ویئرڈویلپمنٹ کمپنیاں، ٹیلی مواصلاتی خدمات مہیا کرنے والی کمپنیاں، سوشل میڈیا فرمیں اورویڈیو گیم ڈویلپرز شامل ہیں۔

سابق ڈپٹی اٹارنی جنرل جیفری روزن نے اس وقت کہا تھا کہ ’’افسوس کی بات ہے،چینی کمیونسٹ پارٹی نے چین کو سائبرمجرموں کے لیے محفوظ بنانے کا ایک مختلف راستہ اختیارکیا ہے۔وہ چین سے باہر کمپیوٹرز پر حملے کرتے ہیں اور چین کے لیے حقوق دانش کی حامل املاک چوری کرتے ہیں۔

واشنگٹن میں چینی سفارت خانے نے فوری طور پر تبصرہ کرنے کی درخواست کا جواب نہیں دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں