دورہ سعودی عرب سے عربوں کیساتھ تعلقات کے نئے دور کا آغاز ہوا: شی جن پنگ

سعودی عرب ہمارے سیاحوں کے مقامات کی فہرست میں شامل ہو گا: چینی صدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

چینی صدر شی جن پنگ نے اس بات کا اعادہ کیا کہ ان کا سعودی عرب کا دورہ عرب دنیا کے ساتھ چین کے تعلقات کے نئے دور کا آغاز ہے۔ انہوں نے کہا عرب دنیا ترقی پذیر ممالک کی صفوں کا ایک اہم رکن ہے۔

سب سے بڑا بزنس پارٹنر

انہوں نے الریاض اخبار کے ایک مضمون میں مزید کہا کہ چین خلیج تعاون کونسل کا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار اور اس کی مصنوعات کا سب سے بڑا درآمد کنندہ ہے۔ انہوں نے کہا سعودی عرب نے اقتصادی اور سماجی تنوع کے لیے مثبت نتائج حاصل کیے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودیہ نے گرین مڈل ایسٹ اور گرین سعودی عرب جیسے اہم اقدامات شروع کیے ہیں۔ بیجنگ عرب ممالک کی اپنی خودمختاری، آزادی اور علاقائی سالمیت کے تحفظ کی کوششوں کی حمایت کرتا ہے۔

شاہی دربار میں ایک سرکاری استقبالیہ

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جمعرات کو چینی صدر شی جن پنگ کا سعودی شاہی عدالت میں استقبال کیا، چینی صدر بدھ کو سعودی عرب پہنچے۔ ان کا دورہ آج جمعہ تک جاری رہے گا۔ اس دورہ کے دوران تین اہم سربراہی اجلاسوں کا انعقاد کیا گیا ہے۔

دریں اثنا چینی خبر رساں ایجنسی ژنہوا کے مطابق چینی صدر شی جن پنگ نے کہا ہے کہ چینی فریق نے سعودی عرب کو چینی سیاحتی گروپوں کے لیے سمندر پار مقامات کی فہرست میں شامل کرنے، دونوں ملکوں کے درمیان لوگوں کے تبادلے کو بڑھانے اور ثقافتی تبادلوں پر اتفاق کیا ہے۔ یہ اتفاق جمعرات کو شی جن پنگ اور شہزادہ محمد بن سلمان کی ملاقات کے دوران کیا گیا۔

دورے کے موقع پر دونوں ممالک میں مشترکہ مفادات کے حصول کے لیے دستیاب وسائل کی سرمایہ کاری کے مواقع پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ علاقائی اور بین الاقوامی پیش رفت، مشترکہ دلچسپی کے امور پر بھی گفتگو کی گئی۔

مختلف دو طرفہ معاہدوں کے ساتھ ساتھ سعودی عرب کے وژن 2030 اور چین کے بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو کے درمیان ہم آہنگی کا منصوبہ پر بھی اتفاق کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں