جو اور خولانی کافی: سعودی خطے جازان کی دو اہم پیداواریں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے جنوبی خطے جازان میں الحشر کے کھیتوں میں موسم سرما آب و تاب دکھا رہا ہے اور ساتھ ہی سطح سمندر سے 2500 میٹر بلند اس علاقے میں کسان پانی کیلئے بھاگ رہے، آبپاشی کر رہے اور فصلوں کی کٹائی میں مصروف ہوگئے ہیں۔

اس حوالے سے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کرتے ہوئے کسان یحیی الحریصی نے کہا الحشر میں موسم سرما کی اہم فصلوں میں سے ایک فیصل "جو" ہے۔ بارش کے ساتھ اس فصل کے بیج بونا شروع کردیے جاتے ہیں۔ مارچ میں فصل تیار ہوجاتی ہے، 'جو' کو موسم سرما کی فصل کہا جاتا ہے۔ سطح سمندر سے بلندی کی وجہ سے خطے میں معتدل اور اور ٹھنڈی آب و ہوا میں جو کو اگانے میں مدد فراہم کرتی ہے۔

یحیی الحریصی نے مزید کہا کہ دوسری اہم فصل "خولانی کافی" ہے۔ موسم سرما کے آغاز میں خولانی قہوہ کے پھل کی کٹائی کی جاتی ہے۔ یہ فصل خزاں کے موسم کے اختتام کے بعد تیار ہوجاتی ہے۔ ان پھلوں کو کاٹ کر خشک کیا جاتا ہے۔ خشک ہونے کے بعد"خولانی کافی" کے پھلوں کو مخصوص جگہوں پر رکھا جاتا ہے جو سایہ میں ہوتے ہیں۔

اس دوران پھلوں کو تقریباً دو ہفتوں تک ہلایا جاتا ہے۔ جس کے بعد وہ دوسرے مرحلے میں چلے جاتے ہیں۔ اس مرحلے میں کافی کے پھلوں کو چھیلا جاتا، مسلا جاتا اور پیسا جاتا ہے۔

کسان یحیی نے بتایا کہ موسم سرما کے دوران الحشر پہاڑوں کی بلندیوں پر درجہ حرارت 5 ڈگری تک چلا جاتا ہے۔ اس موسم میں زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 25 ڈگری سے نہیں بڑھتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں