سعودی فالکن بیوٹی مقابلہ میں شریک ہوکر خاتون نے توجہ حاصل کرلی، منی الخریص کون ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب میں فالکنوں کا "مقابلہ حسن" تو معمول کا حصہ ہے تاہم اس مرتبہ پہلی مرتبہ ایک سعودی خاتون منى الخريص نے بھی اپنے فالکن کے ساتھ مقابلہ میں حصہ لیا اور دنیا کی توجہ حاصل کر لی۔

کنگ عبد العزیز فالکنری فیسٹول میں حسین فالکنز کے درمیان مقابلہ ہوا۔ یہ مقابلہ ریاض شہر کے شمال میں علاقے ملہم میں سعودی فالکنز کلب کے ہیڈ کوارٹرز میں منعقد ہوا ۔

منى الخريص نے المزائن مقابلے میں فالکن "سما" کے ساتھ حر فرخ کے مفت زمرے میں حصہ لیا۔ اپنی شرکت کو انہوں نے مقابلہ میں خواتین کے حصہ لینے کیلئے ایک حوصلہ افزا قدم قرار دیا۔ انہوں نے کہا یہ مقابلہ قدیم سعودی ورثے کی نمائندگی کرتا ہے اور اس طرح کے ورثے کو بحفاظت اگلی نسلوں تک منتقل کرنا چاہیے۔

فیسٹیول میں خواتین کی شرکت کی راہیں کھل گئیں

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو انٹرویو میں منى الخريص نے کہا زمین، ہتھیار اور فالکن ہماری ثقافت سے بطور عرب اور سعودی جڑے ہوئے ہیں۔ میری شرکت کا مقصد قدیم سعودی ثقافت کو اجاگر کرنا، اسے نوجوان نسلوں تک پہنچانا اور اس میدان میں خواتین کی شرکت کا راستہ کھولنا تھا۔

منى الخريص
منى الخريص

الخریص نے مزید کہا فالکنری ہماری ثقافت کا حصہ ہے کیونکہ یہ فالکن ہمارے سفر کے ساتھی ہیں۔ فالکنری سے میری محبت میری شخصیت میں نمایاں ہے اور میں اس بات کی بھی خواہش مند تھی کہ میری شرکت خواتین کیلئے اس فیسٹول میں شرکت کا دروازہ کھولے اور دیگر خواتین بھی سعودی تاریخی ثقافتی تہوار میں حصہ لیں۔ یہی چیز تھی جس نے مجھے کنگ عبدالعزیز فالکن فیسٹیول کے ذریعے اس میدان میں داخل ہونے کا زبردست حوصلہ دیا۔

ہتھیاروں کی شوٹنگ کی انسٹرکٹر

نوجوان سعودی خاتون نے کنگ عبدالعزیز فیسٹیول میں اپنے پرندے "سما" کے ساتھ اپنی شرکت کو ایک دلچسپ تجربہ قرار دیا اور کہا کہ وہ اگلے سال ایک مضبوط فارم کے ساتھ مقابلہ میں واپس آئیں گی۔ الخریص کو گن شوٹنگ انسٹرکٹر کے طور پر جانا جاتا تھا، کیونکہ وہ ہتھیاروں کو طاقت کا ذریعہ سمجھتی ہیں، جس نے انہیں بچپن سے ہی اس دنیا میں آنے کی تحریک دی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ کنگ عبدالعزیز فالکن فیسٹیول میں المزاین مقابلہ سات کیٹگریز میں سب سے خوبصورت فالکن کے انتخاب پر منحصر تھا۔ ہر دور میں پہلی تین پوزیشن لینے والوں میں مالی انعامات تقسیم کیے جائیں گے۔ پہلی پوزیشن حاصل کرنے والے کو 300 ہزار ریال، دوم آنے والے کو 200 ہزار ریال اور سوم آنے والے کو 100 ہزار ریال ملیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں