خیبر آتش فشاں کیمپنگ ایڈونچر کے شائقین کے لیے ایک منفرد سیاحتی مقام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں خیبر آتش فشاں کیمپ جو شاہی کمیشن برائے العلا گورنری کی طرف سے قائم کیا گیا تھا حرہ خیبر میں آتش فشاں چٹانوں کے درمیان کیمپنگ کا تجربہ کرنے کے لیے ایسے زائرین کی میزبانی کرتا ہے جو ایڈونچر اور ایکسپلوریشن کے شوقین ہیں۔ اس مقام پر ہزاروں سال پہلے غیر فعال آتش فشاں کی ایک بڑی تعداد موجود ہے۔

کیمپ کو جبل القدر آتش فشاں پہاڑ سے قربت کی وجہ سے ممتاز مقام دیا گیا ہے۔ اسے حال ہی میں انٹرنیشنل یونین آف جیو سائنسز (IUGS) اور اقوام متحدہ کی تعلیمی، سائنسی اور ثقافتی تنظیم (یونیسکو) نے 100 ارضیاتی مقامات کی فہرست میں شامل کیا ہے۔

122
122

کیمپ جو کہ متعدد یونٹوں اور ان کے باڑوں پر مشتمل ہے۔ اسے ارد گرد کے آتش فشاں خطوں کے ساتھ ہم آہنگی میں ڈیزائن کیا گیا تھا، فطرت سے کوئی تعصب کیے بغیر زائرین کو کیمپ کے پروگراموں سے لطف اندوز ہونے کی اجازت دی گئی تھی جس میں ریسرچ ٹور، لکڑی کی روشنی میں بیٹھ کر باربی کیو سے لطف اندوز ہونا، آتش فشاں پہاڑوں پر چلنا اور چڑھنا جیسے مواقع میسر ہوں گے۔

اس تناظر میں پراجیکٹ کے نگران فیصل القرنی نے سعودی پریس ایجنسی " ایس پی اے" سے بات کرتے ہوئے کہا کہ خیبر آتش فشاں کیمپ ایک مختلف اور منفرد تفریحی تجربہ پیش کرتا ہے، کیونکہ یہ ایک کیمپ مملکت کے وسط میں واقع سب سے بڑا آتش فشاں گڑھا ہے۔ اس منفرد مقام نے اسے دنیا بھر میں ایڈونچر سے محبت کرنے والوں، تحقیق اور جستجو کے متلاشیوں اور محققین، سیاحت کے شوقین لوگوں اور ہائیکرز کی توجہ کا مرکز بنا دیا۔

القرنی نے کہا کہ خیبر آتش فشاں کیمپ پراجیکٹ ہر کسی کے لیے کھلا رہے گا۔ سیاح دن اور تاریخوں کا خود انتخاب کر سکتے ہیں اور آن لائن بکنگ کر اسکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں