کلاڈین گے ہارورڈ یونیورسٹی کی پہلی سیاہ فام صدر بن گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ کی ہارورڈ یونیورسٹی نے پہلی مرتبہ ایک سیاہ فام خاتون کلاڈین گے کو صدر مقرر کر دیا۔ کلاڈین گے ہیٹی کے تارکین وطن کی بیٹی ہیں۔ وہ افریقین سٹڈیز اور اقلیتی سیاست میں ماہر پروفیسر ہیں۔

جمعرات 15 دسمبر کو ہارورڈ یونیورسٹی نے اپنے سب سے اہم کالج کی ڈین کلاڈائن گے کو اپنا صدر مقرر کیا۔ جو اس باوقار تعلیمی ادارے کی قیادت کرنے والی پہلی سیاہ فام شخصیت بن گئی ہیں۔

اپنی ویب سائٹ پر یونیورسٹی نے کلاڈین گے کو ایک بہترین پروفیسر اور سرپرست کے طور پر بیان کیا ہے جس کی کلاسوں میں ریاست ہائے متحدہ میں نسل اور نسلی سیاست، شہری حقوق کے بعد کے دور میں سیاہ فام سیاست، امریکی سیاسی رویے اور جمہوری شہریت سے متعلق موضوعات پر بات کی جاتی ہے۔

یونیورسٹی کے نئے صدر کے لیے سلیکشن کمیٹی کی سربراہ پینی پرٹزکر نے کہا کہ کلاڈین گے نے امریکہ میں عدم مساوات پر ہارورڈ انیشی ایٹو کی بنیاد رکھی اور اس کی سربراہی بھی کی۔ اس اقدام کا مقصد سماجی اور معاشی عدم مساوات پر ہارورڈ میں تدریس اور تحقیق کو آگے بڑھانا ہے۔

کلاڈین فی الحال سائنس اور سوشل سائنسز کے ذمہ دار فیکلٹی کے ڈین کے عہدے پر فائز ہیں۔

مثبت یا معکوس امتیازی سلوک

کلاڈین گے کو 600 سے زائد امیدواروں کے درمیان سے چنا گیا ہے۔ اس چناؤ کئی ماہ لگے ہیں۔ یہ انتخاب ایک ایسے وقت میں جب ہارورڈ جو 20 سال سے شنگھائی ورلڈ یونیورسٹی رینکنگ میں سب سے اوپر ہے اور بنیادی طور پر قدامت پسند امریکی سپریم کورٹ میں مثبت امیتازی سلوک پر بحث کی جارہی ہے۔

31 اکتوبر کو ایک نو قدامت پسند کارکن کی طرف سے جمع کرائے گئے جائزے کی بنیاد پر عدالت نے ایک سیشن منعقد کیا جو قدیم ترین نجی امریکی یونیورسٹی، یعنی ہارورڈ، اور سب سے قدیم سرکاری یونیورسٹی شمالی کیرولینا میں داخلے کے طریقہ کار سے متعلق تقریباً پانچ گھنٹے تک جاری رہا۔ موضوع یہ بھی کہ درخواست دہندگان کی فائلوں کا جائزہ لینے میں جلد کے رنگ یا نسلی اصل کو مدنظر رکھا جاتا ہے۔

اس کا مقصد امریکہ کے امتیازی ماضی کے نتیجے میں پیدا ہونے والی تفاوتوں کو درست کرنا اور اعلیٰ تعلیم میں سیاہ فام، ہسپانوی یا مقامی امریکی طلباء کے حصہ کو بڑھانا تھا لیکن قدامت پسند حلقوں میں ان پالیسیوں کو ہمیشہ معکوش نسل پرستی کے طور پر تنقید کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے۔ توقع ہے سپریم کورٹ جون 2023 کے اختتام سے قبل اپنا فیصلہ جاری کردے گی جس کا اطلاق پورے امریکہ پر ہوگا۔

کلاڈین گے جولائی 2023 کو بوسٹن کے قریب یونیورسٹی آف کیمبرج میں اپنا عہدہ سنبھالیں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں