یورپی یونین کی نئی پابندیاں خودبلاک کے لیے مزید مسائل پیداکریں گی:روس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

روس نے خبردار کیا ہے کہ یوکرین میں جنگ کے معاملے پراس کے خلاف یورپی یونین کی پابندیوں کے تازہ دور سے خودبلاک کے لیےمسائل میں اضافہ ہوگا۔

یورپی یونین کے رہ نماؤں نے اس ہفتے اگلے سال یوکرین کو18ارب یورو(19ارب ڈالر) کی مالی مدد مہیّا کرنے پراتفاق کیا اورماسکو کے خلاف نویں پیکج کے تحت مزید پابندیاں عاید کی ہیں اور مزید 200 روسیوں کو بلیک لسٹ کردیاہے۔اس نے دیگراقدامات کے علاوہ روس کی کان کنی کی صنعت میں سرمایہ کاری پربھی پابندی عایدکردی ہے۔

روسی وزارتِ خارجہ کی ترجمان ماریہ زخروفا نے ہفتے کے روزایک بیان میں کہا کہ ’’موجودہ 'پیکج' کا وہی اثر پڑے گا جو پچھلے تمام پیکجوں کاہوچکا ہے اورخود یورپی یونین میں سماجی و اقتصادی مسائل میں اضافہ ہوگا‘‘۔

انھوں نے برسلز پربھی زور دیا کہ وہ ان تمام پابندیوں کو منسوخ کرے جو براہ راست یا بالواسطہ طور پر روس کی اناج اورکھادکی برآمدات پراثراندازہو رہی ہیں۔

صدرولادی میرپوتین نے جمعرات کے روزکہا تھاکہ روس مغربی پابندیوں کا مقابلہ کرنے کے لیے چین کوگیس کی برآمدات میں تیزی سے اضافہ کرے گا۔اس کے علاوہ وہ نئے شراکت داروں کے ساتھ تجارتی تعاون کو بھی وسعت دے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں