روس،یوکرین کے درمیان گیس پائپ لائن میں دھماکا،تین افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روس کے وسطی علاقے میں گیس پائپ لائن میں دھماکے کے نتیجے میں تین افراد ہلاک ہوگئے ہیں اوریورپ کو محدود مقدارمیں جانے والی روسی گیس کی ترسیل معطل ہوگئی ہے۔

مقامی حکام نے ٹیلی گرام ایپ پربتایا کہ روس کے آرکٹک سے یوکرین کے راستے یورپ تک گیس لے جانے والی اورین گوئی-پومری-اوژوروڈ پائپ لائن کے ایک حصے میں گیس کا بہاؤ دوپہرایک بج کر 50 منٹ (1050 جی ایم ٹی) تک روک دیا گیا تھا۔

جمہوریہ چوواشیا کے گورنراولیگ نیکولائیف نے سرکاری ٹی وی کو بتایا کہ اس حادثے میں تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ وہ دھماکے کے وقت سروس کا کام کررہے تھے جبکہ ایک اورڈرائیور صدمے کی حالت میں تھا۔

انھوں نے کہا کہ یہ واضح نہیں کہ پائپ لائن کے ذریعے گیس کی ترسیل کب دوبارہ شروع ہوسکتی ہے ، اور حکام اس پرکام کررہے ہیں۔

چوواشیا کی علاقائی ہنگامی صورت حال کی وزارت نے بتایاکہ وولگا شہرقازان سے قریباً 150کلومیٹر (90 میل) مغرب میں کالینینو گاؤں کے قریب بحالی کے کام کے دوران میں پائپ لائن میں دھماکا ہوا ہے۔ اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والےگیس کے شعلے کو بجھادیا گیا ہے۔

1980 کی دہائی میں بچھائی گئی یہ پائپ لائن سڈزا میٹرنگ پوائنٹ کے ذریعے یوکرین میں داخل ہوتی ہے اور یہ اس وقت روسی گیس کے یورپ تک پہنچنے کا مرکزی راستہ ہے۔

اس سال یورپ میں گیس کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔اس کی بڑی وجہ تو یوکرین میں روس کی جنگ ہے۔اس کے علاوہ روس نے جرمنی میں اپنی گیس پائپ لائن ذریعے برآمدات میں کمی کی ہے، یورپی صارفین کوروسی گیس بھیجنے کے لیے یوکرین کے راستے صرف پائپ لائنوں کو چھوڑ دیا ہے۔

روس کی سرکاری گیس کمپنی گیزپروم کے صدر دفتر اور اس کی مقامی شاخ نے فوری طور پرواقعہ پر تبصرہ کرنے کی درخواستوں کا جواب نہیں دیا۔

البتہ اس نے منگل کے روزاس توقع کا اظہارکیا تھا کہ وہ آیندہ 24 گھنٹے میں سدزہ کے راستے یوکرین سے یورپ میں چارکروڑ30لاکھ مکعب میٹر گیس پمپ کرے گی۔

اس خبرکے بعد ڈچ ٹی ٹی ایف مرکز پرمستقبل کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔بینچ مارک ٹی ٹی ایف فرنٹ ماہ کا معاہدہ 1.10 یورو بڑھ کر 108.10 یورو فی میگاواٹ گھنٹا 1347( جی ایم ٹی) تک تھا۔ اس نے دن کے اوائل میں قریباً 105 یورو فی میگاواٹ گھنٹاکا کاروبار کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں