مرجان کے لاروا کو منجمد اور محفوظ کرنے کے طریقے کا کامیاب تجربہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

آسٹریلیا کے سائنسدانوں نے مرجان کے لاروا کو منجمد کرنے اور محفوظ کرنے کے طریقے کی کامیابی سے آزمائش کرلی ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس طریقے سے موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے خطرے میں پڑنے والی جنگلی چٹانوں کو خطرے سے محفوظ رکھا جاسکے گا۔

موسمیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے سمندروں میں آنے والے عدم استحکام کے سبب مرجان کی چٹانوں کی حفاظت کے لیے سائنسدانوں نے کوششیں شروع کر دی ہیں۔

گریٹ بیریئر ریف کو گزشتہ سات سالوں میں چار مرتبہ بلیچنگ واقعات کا سامنا کرنا پڑا۔ جن میں لانینا کے دوران ہونے والی پہلی بلیچ بھی شامل ہے۔ جو عام طور درجہ حرارت کو کم کرتا ہے۔

مرجان کے لاروا کو محفوظ کرنے کے لیے آسٹریلین انسٹی ٹیوٹ آف میرین سائسز میں 'کرائیومیش' کا استعمال کیا گیا۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے مرجان کی حفاظت کے لیے 'کرائیومیش' سستے داموں تیار کیا جا سکتا ہے۔ واضح رہے 'کرائیومیش' کے ذریعے مرجان کی حفاظت کے لیے ہونے والا یہ پہلا تجربہ تھا۔

یونیورسٹی آف مینیسوٹا کے کالج آف سائنس اینڈ انجینئرنگ کی ٹیم نے 'کرائیومیش' ٹیکنالوجی وضع کی تھی جو مرجان کو 196 ڈگری سینٹی گریڈ پر محفوظ کرنے میں مدد دیتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں