یوکرینی صدر کے الزامات بے بنیاد اور من گھڑت ہیں: ترجمان ایرانی وزارت خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران میں یوکرین صدر ولادی میر زیلنسکی کے دورہ امریکہ کے دوران ایران پر لگائے الزامات کو بے بنیاد اور من گھڑت قرار دیا ہے۔

صدر زیلنسکی کے الزامات کے جواب میں ایرانی وزارت کارجہ کے ترجمان ناصر کنعانی نے کہا ہے ' ہم نے ہمیشہ یوکرین سمیت سب ملکوں کی علاقائی سلامتی اور خود مختاری کا احترام کیا ہے۔ اسلیے صدر زیلنسکی کو ایران پر الزام لگاتے ہوئے یہ سوچنا چاہیے تھا ایران تذویراتی حوالے سے کس قدر تحمل اور برداشت کا ؐطاہرہ کرنے والا ملک ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے مزید کہا 'صدر زیلنسکی کے الزامات مکمل طور پر بے بنیاد ہیں ان الزمات کو روکنا ہوگا۔'

ایرانی کے سرکاری خبررساں ادارے ' ارنا ' نے وزارت خارجہ کے ترجمان کے حوالے سے مزید کہا ہے' ہماری ساری توجہ اسلامی جمہوریہ ایران کی اسلحی ضروریات پوری کرنے پر مرکوز ہے۔ اس وجہ سے اسلحے کی ایکسپورٹ نہیں کیا گیا۔ یوکرین کی جنگ میں استعمال کرنے کے لیے بھی کسی فریق کو نہیں بھیجا گیا ہے۔

واضح رہے یوکرین کے صدر نے امریکی کانگریس سے خطاب میں کہا تھا کہ ایرانی ڈرون طیاروں نے روس کے ہاتھوں میں جا کر یوکرین کے لیے ایک ایک بڑے خطرے کی صورت اختیار کر لی ہے۔' ان ڈرونز سے ہمارے سول انفراسٹرکچر کو خطرات ہیں۔'

انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ روس اپنے توپ خانے کے ذریعے ہمارے شہروں تک نہیں پہنچ سکتا تھا۔ اس لیے ان نے ہمارے شہروں کو ایران ڈرونز اور میزائلوں سے نشانہ بنایا ہے۔'

زیلنسکی نے اس سلسلے میں روس کی طرف سے یوکرینی شہریوں کے قتل عام میں ایران کو اس کا اتحادی بھی قرار دیا۔ تاہم ایران نے ایک مرتبہ پھر ان الزامات کی تردید کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں